ضمنی پارلیمانی انتخابات میں بی جے پی اترپردیش اور بہار کی تینوں لوک سبھا سیٹیں ہار گئی

لکھنؤ: حال ہی میں شمال مشرق میں بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی ) کی شاندار کامیابی کی مٹھاس اس وقت کڑواہٹ میں بدل گئی جب بہار اور اتر پردیش میں ہوئے لوک سبھا اور اسمبلی ضمنی انتخابات میں اس کو ایسا زبردست جھٹکا لگا جس کا اس نے تصور بھی نہیں کیا ہوگا۔
اترپردیش کی جن دو لوک سبھا سیٹوں گورکھپور اور پھول پورپرضمنی انتخابات ہوئے ان پر سماج وادی پارٹی(ایس پی) اور بہوجن سماج پارٹی(بی ایس پی) اتحاد کے امیدوار جیت گئے ۔
یہ دونوں سیٹیں اس لیے بھی پارٹی کے وقار کا مسئلہ تھیںکیونکہ گورکھپور کی سیٹ یو گی ادتیہ ناتھ کو ریاست کا وزیر اعلیٰ اور پھولپور کی نشست کیشو پرساد موریہ کو نائب وزیر اعلیٰ مقرر کیے جانے کے باعث خالی ہوئی تھی۔لیکن جس نریندر مودی نے2014میں تنہا اپنے بل پر اترپردیش کی 80میں سے73لوک سبھا سیٹی جیتی تھیں ریاست کے وزیر اعلیٰ ہوتے ہوئے بھی یوگی دو میںسے ایک سیٹ بھی نہیں بچا سکے۔
عام خیال یہ ظاہر کیا جار ہا ہے کہ یوگی نے صرف چند ماہ کے اندر اترپردیش میں بی جے پی کو 20سال پیچھے پہنچا دیا۔ پھول پور میں اگر عتیق احمد آزاد امیدوار کے طور پر اور کانگریس امیدوار میدان میں نہ ہوتے تو شاید ایس پی بی ایس پی اتحاد کے امیدوار کو ایک لاکھ سے زائد ووٹوں سے کامیابی ملتی۔
ایسی ہی کچھ صورت حال بہار کی ہے جیل میں بند ہونے کے باوجود لالو پرساد یادو بی جے ہی ۔جے دی یو اتحاد پر کچھ ایسے بھاری پڑے کہ آر جے ڈی اور کانگریس کا ساتھ چھوڑ کر بی جے پی قیادت والے این ڈی اے میں شامل ہونے والے بہار کے وزیر اعلیٰ اور جے ڈی یو صدر نتیش کمار بہار کے ادتیہ ناتھ یوگی ثابت ہوگئے۔
یہاں ارریہ کی لوک سبھا اور جہان آبا دکی اسمبلی سیٹ آر جے ڈی نے ،جس کے سربراہ لالو یادو جیل میں ہیں،بی جے پی کو زبردست مارجن سے شکست دی۔ یہاں آر جے ڈی امیدوار کمار کشن نے جے دی یو ابھی رام شرما کو 35036ووٹ سے ہرایا۔
وٹوبھبوا میں البتہ بی جے پی کی جیت ہوئی جہاں اس کی امیدوار رنکی رانی پانڈے نے کانگریس کے شنبھو سنگھ پٹیل کو ہرایا۔

Title: bjp confronts big setback in Urdu | In Category: ہندوستان  ( india ) Urdu News

Leave a Reply