ویزا مسئلہ طے پاجائے تو ہند ۔ازبکستان سیاحت کو زبردست فروغ حاصل ہو گا:دونوں ممالک کا خیال

نئی دہلی: ہندوستان اور ازبیکستان نے باہمی تجارتی اور اقتصادی تعلقات کو مستحکم اور وسیع بنانے کا عزم ظاہر کرتے ہوئے دہلی میں ازبیک انڈیا ٹریڈنگ ہاوس کمپنی قائم کی ہے۔ کا مرس اور صنعت کی وزیر م نرملا سیتارمن اور ازبیکستان کے خارجہ امور کے وزیر عبدالعزیز کا ملو ف، اور بیرونی تجارت کے وزیر علی یور غنی ایف نے کل دیر شام یہاں با ہمی میٹنگ کی جس میں ہندوستان اور ازبیکستان کے درمیان تجارتی اور اقتصادی تعلقات کو مزید مستحکم اور وسیع کر نے پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ میٹنگ کے دوران کا مرس کی وزیر نے دہلی میں ایک مشترکہ پروجیکٹ کی کمپنی کے طور پر ازبیک انڈیا ٹریڈنگ ہا وس قائم کر نے پر خوشی کا اظہار کیا۔
محترمہ سیتا رمن نے ازبیکستان اور ہندوستان میں تعلیم اور صحت جیسی خدمات اور اشیا میں سرما یہ کا ری اور تجارت سمیت تمام سطحوں پر تجا رتی تعلقات کو فروغ دینے کی خاطر پرا ئیویٹ صنعت کی قیا دت والے مشترکہ بزنس کا و نسل کو سرگرم کر نے اور قائم کر نے کا مشور ہ دیا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اگر ہندوستان کے سی آ ئی ایس چیمبر آف کا مرس اینڈ انڈ سٹری اور ازبیک چیمبر آف کا مرس کے درمیان مذاکرات کے تحت معاہدے کا مسودہ جلد تیار ہو جا تا ہے اور مشترکہ بزنس کونسل اپنا کام شروع کر دیتی ہے تو یہ دونوں ملکوں کے درمیان با ہمی اقتصادی اور تجا رتی تعلقات کو فروغ دینے کیلئے نہا یت مثبت پیش رفت ہو گی۔ دونوں وزیروں نے با ہمی تجا رتی تعلقات کو مستحکم کر نے کے لئے ٹرانسپورٹ اور نقل و حمل کے بنیادی ڈھانچے کی اہمیت کو اجا گر کیا۔ کا مرس کی وزیر نے ازبیک وزیر سے درخواست کی کہ وہ کثیر جہتی آئی این ایس ٹی سی معا ہدے کے رکن بن جا ئیں جس کے تحت ایران کے را ستے بین الاقوامی ٹرانزٹ کا رگو کے ٹریفک میں سہو لت پیدا ہو گی۔ محترمہ سیتا رمن نے ازبیک وزیر سے یہ بھی درخواست کی کہ وہ ازبیکستان میں چمڑے کی مصنوعات اور جو توں کی درآمداد پر ڈیوٹی کو موجودہ 30 فیصد سے کم کر کے 10 فیصد کریں جو ہندوستان میں سب سے زیادہ ترجیحی ملک کے لئے موجودہ شرح ہے۔
انہوں نے اس بات کا بھی ذکر کیا کہ ہندوستان تیار چمڑا ازبیکستان سے حاصل کر سکتا ہے۔ کا مرس کی وزیر نے ازبیک وزیر سے یہ بھی کہا کہ ازبیکستان کو برآمد کی جا نے والی ہندوستان کی انجینئرنگ مصنوعات پر درآمداتی ڈیوٹی کم کر نے پر غور کریں جو ازبیکستان نے عائد کر رکھی ہے اور جو خاص طور پرکپڑے اور ملبوسات پر کا فی زیا دہ ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ رجسٹریشن اور سرٹیفکیشن کے عمل کو بھی آسان بنا یا جا ئے۔ محترمہ سیتارمن نے ازبیکستان کی وزیر کو یہ بھی بتا یا کہ غیر محصولا تی رکا وٹیں جیسے درآمداتی کوٹہ اور لا ئسنس ، قیمت اور بیرونی زر مبادلہ کا کنٹرول ، پیچیدہ کسٹم اور انتظامی ضابطے اور سرحدوں کو بند کئے جا نے سے بھی بین علا قائی تجا رت میں کمی ہو رہی ہے۔ از بیکستان کے بیرونی تجا رت کے وزیر نے بتا یا کہ ازبیک حکومت مختلف ضابطوں ،نظام اور عمل کو زیا دہ لچکدار اور آسان بنا نے کیلئے کا م کر رہی ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ برآمد کا روں کو در پیش زیا دہ تر مسا ئل کو جلد ہی حل کر دیا جا ئے گا۔ کا مرس کے وزیر نے ازبیک وزیر سے درخواست کی کہ ہندوستانی تا جروں اور سیا حوں کو ویزا دینے کا عمل آسان بنا یا جا ئے اور امید ظاہر کی کہ اگر ویزا کا معا ملہ حل کر لیا جا تا ہے تو دونوں ملکوں میں سیاحت کو بھی فروغ حاصل ہو گا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bilateral meeting india and uzbekistan in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
Tags: ,

Leave a Reply