بہار41سال بعد زبردست سیلاب سے دوچار، 19 ہلاک، 18 لاکھ افراد متاثر، فصلیں تباہ

پٹنہ: بہار میں گنگا اور سون ندیوں سمیت دیگر بڑی ندیوں کے پانی کی سطح میں مسلسل اضافہ کی وجہ سے نشیبی علاقوں میں اب بھی سیلاب کی صورتحال سنگین بنی ہوئی ہے جس سے جہاں ایک جانب 12 اضلاع کے 18 لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں وہیں سیلاب سے مرنے والوں کی تعداد بھی بڑھ کر 19 ہو گئی۔
بتایا جاتا ہے کہ 41سال بعد پہلی بار اس قدر بھیانک سیلاب آیا ہے۔ ڈیزاسٹر مینجمنٹ محکمہ کے پرنسپل سکریٹری ویاس جی نے یہاں بتایا کہ گنگا اور سون ندیوں میں آنے والی طغیانی کی وجہ سے ریاست کے بکسر، بھوجپور، پٹنہ، ویشالی، سارن، بیگوسرائے، سمستی پور، لکھی سرائے،کھگڑیا، مونگیر، بھاگلپور اور کٹیہار کے نشیبی علاقوں میں رہنے والے لوگ بڑی تعداد میں متاثر ہوئے ہیں۔ ان اضلاع کے 18 لاکھ افرادسیلاب کی زد میں ہیں وہیں فصلوں کو وسیع پیمانے پر نقصان ہوا ہے۔
پرنسپل سکریٹری نے بتایا کہ ریاست میں سیلاب سے اب تک 19 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ ضلع بھوجپور میں سب سے زیادہ 11 اور ضلع ویشالی میں چھ افراد سیلاب کے پانی میں بہہ جانے ہلاک ہوچکے ہیں۔ اس کے علاوہ بڑی تعداد میں کچے مکانوں کے بھی منہدم ہو جانے کی اطلاع ہے۔
ڈیزاسٹر مینجمنٹ محکمہ کے ذرائع نے بتایا کہ اندرپوری بیراج سے آج 4 لاکھ 81 ہزار 259 کیوسک پانی سون ندی میں چھوڑا گیا ہے۔ جس کو دیکھتے ہوئے سون ندی کے قریبی اضلاع کی انتظامیہ کو متنبہ کیا گیا ہے۔ اس سے قبل اندرپور ی بیراج سے کل 7 لاکھ 71 ہزار سے زائد کیوسک پانی سون ندی میں چھوڑا گیا تھا۔
ذرائع نے بتایا کہ متاثرہ اضلاع میں قومی آفات رسپونس فورس (این ڈی آر ایف) اور ریاستی آفات ایکشن فورس کی ٹیموں کو راحت رسانی اور بچاو¿ کے کاموں میں لگایا گیا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bihars worst flood in 41 years claims 19 lives 18 lakh hit in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply