بہار کے نالندہ میں واقع ایک غیر قانونی پٹاخہ فیکٹری میں دھماکہ،6ہلاک و30زخمی

پٹنہ:بہار کے ضلع نالندہ میں سوہسرائے تھانہ علاقہ کے خاص گنج محلہ میں غیرقانونی طریقہ سے چل رہی پٹاخہ فیکٹری میں دھماکہ ہوجانے سے ایک ہی کنبہ کے چار چھوٹے بچوں سمیت 6افراد ہلاک اور 30دیگر زخمی ہوگئے۔پولیس سپرنٹنڈنٹ سدھیر کمار پوریکا کے مطابق خاص گنج گاؤں کے جس مکان میں غیرقانونی طریقہ سے چل رہی پٹاخہ فیکٹری میں جمعرات کو رات دیر گئے اچانک دھماکہ ہوا اس میں محمد سرفراز نامی شخص کرایہ پر رہتا ہے۔وریکا نے بتایا کہ اس واقعہ میں منا پنڈت، سرفراز کی ایک ماہ کی بیٹی سمیرا ، 3سالہ فاطمہ، 4سالہ بیٹا سرتاج اور اس کی بہن شائستہ کی موقع پر ہی موت ہوگئی۔
زخمیوں میں سے چار کی حالت تشویشناک ہے اور انہیں بہتر علاج کے لئے پٹنہ میڈیکل کالج اسپتال (پی ایم سی ایچ) بھیج دیا گیا ہے جبکہ 26دیگر زخمیوں کو بہار شریف صدر اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ انتظامیہ تمام زخمیوں کے علاج پر نظررکھ رہی ہے۔ ان کے علاج کے لئے تمام طرح کی سہولیات دستیاب کرائی جا رہی ہیں۔ دھماکہ کے بعد انسداد دہشت گردی دستہ (اے ٹی ایس) کی آٹھ رکنی ٹیم جائے حادثہ پر پہنچی اور جانچ کے لئے موقع سے کئی اہم نمونے اپنے ساتھ لے گئی۔
غیرقانونی طریقہ سے پٹاخہ فیکٹری چلانے اور دھماکہ کے معاملہ میں محمد سرفراز کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ وہیں سوہسرائے تھانہ کے ایس ایچ او کو فوری اثرات سے معطل کردیا گیا ہے۔ معاملہ کی تفتیش کے لئے تین رکنی کمیٹی بنائی گئی ہے جس میں ایڈیشنل کلکٹر ، سرکل افسر اور پولیس سپرنٹنڈنٹ شامل ہیں۔جائے حادثہ پر پہنچے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ ڈاکٹر تیاگ راج ایس ایم نے میونسپل کمشنر بہار شریف کو ہدایت دی ہے کہ تین دنوں کے اندر شہر میں تمام غیرقانونی طریقہ سے چل رہی دکانوں اور پٹاخہ بنانے والوں کی تفتیش کرکے ایک رپورٹ پیش کریں۔
انہوں نے کہاکہ اس طرح کی غیرقانونی سرگرمیوں میں شامل لوگوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔علاقہ کے ایس ایچ او کو معطل کر دیا گیا۔اور اس غیر قانونی فیکٹر کے مالک کے اتھ اس کی ساز باز کی تحقیقات کی جا رہی ہے۔

Title: bihar 6 killed 30 injured in blast at illegal nalanda firecracker unit | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply