کسانوں پر لاٹھی چارج:کانگریس و دیگر غیر بھاجپا پارٹیوں کے ساتھ بی جے پی کی حلیف جے ڈی یو نے بھی مذمت کی

نئی دہلی:عدم تشدد کے علمبردار و پجاری مہاتما گاندھی کے یوم پیدائش پر ہری دوار سے دہلی تک پید ل مارچ کرکے دہلی آنے والے کسانوں کو دہلی میں داخل ہونے سے روکنے کے لیے ان پر دہلی یوپی بارڈر کے قریب پولس کارروائی کی کانگریس، سماج وادی پارٹی (ایس پی)، عام آدمی پارٹی ، بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی)، مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم)، سیتکاری سنگٹھن،جنتا دل سیکولر(جے ڈی ایس) اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی ) کی حلیف جماعت جنتاد ل یونائیٹڈ (جے ڈی یو) نے شدید مذمت کی ۔

کانگریس صدر راہل گاندھی نے ٹوئیٹ کر کے کہا کہ اہنسا کے پجاری کے یوم پیدائش پر پرامن طریقے سے پیدل مارچ کر کے دہلی آنے والے کسانوں پر لاٹھی چارج کر کے مودی حکومت نے یہ پیغام دیا ہے کہ اس کے دور میں کسان اپنا درد بیان کرنے کے لیے ملک کے دار الخلافہ میں داخل نہیں ہو سکتے ۔

کانگریس کے ترجمان رندیپ سنگھ سرجے والا نے بھی ٹویٹ کیا اور کہا کہ کانگریس ورکنگ کمیٹی کسانوں کے اوپر ہوئے لاٹھی چارج کی سخت مذمت کرتی ہے۔ت

رجمان نے کسانوں پر لاٹھی چارج کےلئے مرکزی حکومت کے ساتھ ہی اتر پردیش حکومت کی بھی مذمت کی اور کہا کہ مہاتما گاندھی کی 150ویں سالگرہ اور شاستری جی کی سالگرہ پر کسانوں پر مودی۔یوگی حکومتوں کے ذریعہ کیے گئے ظلم کو برداشت نہیں کیا جائےگا۔

دہلی کے وزیرا علیٰ اروند کیجریوال نے بھی کسانوں پر لاٹھی چارج کو غلط بتایا اور کہا کہ کسانو ں کے مطالبات جائز ہیں اوران پر غور کیا جانا چاہئے ۔

بی ایس پی سربراہ مایا وتی نے کہا کہ اب بی جے پی اپنے اس کیے کی سزا پانے کے لیے تیار رہے۔

انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ جس طرح کسانوں پر لاٹھی چارج کیا گیا اور ان سے بدسلوکی کی گئی اس کا خمیازہ بھگتنے کے لیے بی جے پی کو تیار رہنا چاہیے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Be prepared to face consequences of lathicharge on farmers in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment