بی بی سی کو قاضی رنگا پر بنائی گئی فلم کے لئے وجہ بتاو نوٹس

نئی دہلی: (یو این آئی)ماحولیات او رجنگلات کی وزارت کے تحت کام کرنے والے نیشنل ٹائیگر کنزرویشن اتھارٹی نے آسام کے قاضی رنگا ٹائیگر سینکچوری علاقہ پر کلنگ فار کنزرویشن کے نام سے متنازع فلم بنانے کے الزام میں بی بی سی کو وجہ بتاو نوٹس جاری کرتے ہوئے پوچھا ہے کہ اس حرکت کے لئے عکس بندی کی اجاز ت کے لئے دیا گیا لائسنس رد کیوں نہ کردیا جائے۔ یہ نوٹس جنونی ایشیائی نیوز بیورو اور فلم ساز جسٹس رالٹ کو بھیجا گیا ہے۔
نوٹس میں کہا گیا ہے کہ اس فلم میں جنگلاتی زندگی تحفظ کے حکومت کی کوششوں کو منفی انداز میں پیش کیا گیا ہے اور محفوظ جنگلاتی علاقے میں غیر قانونی شکار پر روک کی سرکاری پالیسی کو دراصل حکومت کی اجازت دینے کے نظم کے مترادف قرار دیا گیا ہے۔ ایسے میں جنگلاتی زندگی تحفظ قانون 1972 کے تحت بی بی سی کو ہندوستان میں جنگلاتی علاقوں کی عکس بندی کے لئے دیا گیا لائسنس کیوں نہ رد کردیا جائے۔ اس سلسلے میں بی بی سی اور فلم ساز سے ایک ہفتے کے اندر جواب طلب کیا گیا ہے۔
دریں اثنا بی بی سی کے ترجمان نے کہا فلم کا ارادہ کسی کے امیج کو خراب کرنا نہیں ہے۔ہم نے سرکاری پالیسیوں کے مثبت او رمنفی دونوں پہلووں کو دکھانے کی کوشش کی ہے۔ اس میں خاص طور پر جنگلاتی علاقوں کے قریب رہنے والے لوگوں کی پریشانیوں کو اجاگر کیا گیا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bbc journalist faces action for faulty report on govts kaziranga in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply