یہ دلت بمقابلہ دلت نہیں بلکہ نظریاتی جنگ ہے:عہدہ صدارت کے لیے اپوزیشن امیدوار میرا کمار

نئی دہلی: صدارتی انتخاب کے لئے اپوزیشن کی امیدوار میرا کمار نے اپنی انتخابی مہم کا آغاز ’سابرمتی آشرم‘ سے کرنے کا اعلان کرتے ہوئے الیکٹورل کے تمام ارکان سے ’ضمیر کی آواز‘ پر ووٹ ڈالنے کی اپیل کی ہے اور کہا ہے کہ وہ اعلیٰ آئینی عہدے کا یہ انتخاب ذات نہیں بلکہ نظریے کی بنیاد پر لڑ رہی ہیں۔ محترمہ کمار نے امیدوار بننے کے بعد آج یہاں اپنی پہلی پریس کانفرنس میں اپنے اوپر لگے تمام الزامات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے یہ بھی کہا کہ یہ ان کی شبیہ خراب کرنے کی کوشش ہے۔
وہ کل صبح گیارہ بجے پارلیمنٹ ہاؤس میں اپنا پرچہ نامزدگی داخل کریں گی اور 30 جون کو بابائے قوم مہاتما گاندھی کے آشرم سابرمتی سے اپنی انتخابی مہم کا آغاز کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ 17 اہم اپوزیشن جماعتوں نے اتحاد اور عمومی نظریہ کی بنیاد پر انہیں اپنا امیدوار بنایا ہے۔ یہ نظریہ سماجی انصاف، کثیر جہتی سوسائٹی، پریس کی آزادی، غربت کا خاتمہ اور ذات پات کے نظام کی تباہی پر مبنی اور یہ اقدار ان کے دل کے قریب ہیں جن پر ان کاگہر عقیدہ ہے۔
سابق لوک سبھا اسپیکر نے بتایا کہ انہوں نے دو دن پہلے الیکٹورل کالج کے تمام اراکین کو خط لکھ کر انہیں ووٹ دینے کی اپیل کی ہے۔ پانچ بار ایم پی رہیں محترمہ کمار نے ان اراکین سے کہا کہ تاریخ نے ان کے سامنے منفرد موقع پیش کیا ہے اور انہیں دوسری چیزوں کو بھلاکر ضمیر کی آواز پر ان کی حمایت کرنی چاہئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Battle of ideology not dalit vs dalit meira kumar on president poll in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply