بنگلہ دیشی لڑکے کے تریپورہ کی عدالت سے فرار ہونے کے واقعہ کی تحقیقات کا حکم جاری

اگرتلہ:تریپورہ کی وزارت داخلہ نے جنوبی تریپورہ کے پولس سپرنٹنڈنٹ کومقامی عدالت سے ایک بنگلہ دیشی قید ی کی گمشدگی کے واقعے کی تحقیقات کی ہدایت جاری کی ہے۔ سپرنٹنڈنٹ آف پولیس مانوک اپپیر نے کہا کہ ڈپٹی پولیس سپرنٹنڈنٹ کو اس واقعہ کی تحقیقات کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا، “تحقیقاتی رپورٹ آنے کے بعد فرائض کے تئیں اگر کوئی لاپرواہی پائی جاتی ہے تو اس کے ذمہ دار افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔” پولیس کواندیشہ ہے کہ فراربنگلہ دیشی قیدی ندی کے ذریعے اپنے ملک پہنچ چکا ہوگا۔وہ بنگلہ دیش کے نواکھالی ضلع کے پرسورام گاؤں کا رہنے والا ہے۔ مسٹر اپپیر نے بتایا کہ 19 اگست کو گاڑیوں کی تلاشی کے دوران، تین بنگلہ دیشی حسین میاں، اقبال میاں اور بابل میاں کو گرفتار کیا گیا تھا۔ تینوں کو پیشی کے لئے عدالت میں لایا گیا تھا اور وہ اپنی پیشیکے منتظر تھے۔
اس دوران ، حسین اچانک بھاگ گیا اور قریبی دریا میں کود گیا۔ پولیس ان کے پیچھے گئی لیکن اسے پکڑا نہیں جا سکا۔ تینوں بنگلہ دیشی نابالغ تھے اور عدالت نے ان کو حکم دیا تھا کہ وہ انہیں اگرتلہ چائلڈ ہوم بھیجیں۔ پولیس نے رات میں دوبچوں کو چائلڈ ہوم میں بھیج دیا تھا۔ تینوں دبئی سے ممبئی ہوتے ہوئے اپنے وطن واپس لوٹ رہے تھے۔ تاہم، پولس انسپکٹر سدھارتھ شنکر چودھری نے اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ پولیس اہلکاروں کی غفلت کے باعث قیدی فرار ہونے میں کامیاب ہوا۔ دریں اثنا اگرتلہ پولیس نے رادھا نگر علاقے سے روبیل ساہا اور پلاش داس نام کے دو بنگلہ دیشی شہریوں کو گرفتار کیا ہے۔ دونوں برتن کے الگ الگ دکان میں کام کر تے تھے۔ دونوں بنگلہ دیش کے نیترکون ضلع کے باشندہ ہیں۔ تاہم پولیس نے اب تک دکانوں مالکان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bangladeshi teenager escapes from a court in tripura in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply