بابری مسجد انہدام کیس کے تما م ملزموں کے خلاف عدالتی عمل میں تیزی لائی جائے:سپریم کورٹ

نئی دہلی:بھارتیہ جنتا پارٹی کے کئی سینیئر لیڈران بشمول ایل کے آڈوانی،مرلی منوہر جوشی اور مرکزی وزی اوما بھارتی اس وقت ایک نئی مشکل میںپڑ گئے جبسپریم کورٹ نے بابری مسجد انہدام معاملہ کے مزموں کے خلاف مقدمہ چلانے میںتاخیر پر تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ عدالتی عمل میں تیزی لانے کے لیے ملزموں پر مشترکہ مقدمہ چلایا جا سکتا ہے۔
سپریم کورٹ نے ایسے اشارے دیے ہیں جن سے یہ مطلب اخذ کیا جا سکتا ہے کہ رائے بریلی اور لکھنؤ کی دو مختلف عدالتوں میں چلائے جارہے دو علیحدہ مقدمات مدغمکیے جاسکتے ہیں۔ عدالت عظمی نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی، سابق وزیر اعلی کلیان سنگھ، مرلی منوہر جوشی، مرکزی وزیر اوما بھارتی اور دیگر رہنماؤں کے خلاف مجرمانہ مقدمہ چلائے جانے کے بھی اشارہ دیے ہیں۔
جسٹس پنا کی چندر گھوش اور جسٹس رو?گٹن ایف نریمن کی بنچ مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) اور حاجی محبوب احمد کی درخواست پر سماعت کر رہی ہے۔ سی بی آئی نے آڈوانی، جوشی، اوما بھارتی اور اس وقت کے اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ اور راجستھان کے موجودہ گورنرن کلیان سنگھ کو بری کرنے کے الہٰ آباد ہائی کورٹ کے فیصلہ کو چیلنج کیا تھا۔
سماعت کے دوران عدالت عظمی نے سی بی آئی سے پوچھا کہ مندرجہ بالا رہنماؤں کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ نے جب مجرمانہ سازش رچنے کی دفعہ خارج کی تھی تو ضمنی چارج شیٹ داخل کیوں نہیں کی گئی۔ عدالت نے کہا کہ صرف تکنیکی بنیاد پر کسی کو راحت نہیں دی جا سکتی ہے۔ توقع ہے کہ سپریم کورٹ آئندہ سماعت میں جو 22مارچ کوہوگی، کیس میں حتمی فیصلہ سنا دے گی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Babri masjid demolition supreme court wants trial against advani joshi uma in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply