اجودھیا ملکیت تنازعہ: ثالثی کار آمد ثابت نہ ہوئی تو سپریم کورٹ25جولائی سے سماعت شروع کر دے گی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ اگر اجودھیا تنازعہ میں ثالثی کارآمد ثابت ہوتی نظر نہ آئی تو عدالت عظمیٰ اس معاملہ کی سماعت25جولائی سے شروع کر دے گی۔

چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی زیر سربراہی ایک آئینی بنچ نے آج جمعرات کو اجودھیا تنازعہ میں فیصلہ کیا کہ اگر اجودھیا ملکیت مقدمہ میں ثالثی کرنے والی کمیٹی نے ہاتھ کھڑے کر دیے اور کہا کہ ہندو و مسلم فریقوں کو ذہنی و قلبی طور پر آمادہ کرنے کی کوششوں بار آور ثابت نہیں ہو رہی ہیںتو عدالت اجودھیا ملکیت تنازعہ اپیلوں پر 25جولائی سے سماعت شروع کر دے گی۔

بنچ نے سپریم کورٹ کی تشکیل کردہ ثالثی کمیٹی کے سربراہ ریٹائرڈ جج جسٹس ایف ایم آئی خلیفہ اللہ سے کہا کہ وہ18جولائی تو رپورٹ دے دیں کہ اجودھیا تنازعہ ثالثی میں کیا پیش رفت ہوئی ہے۔

عدالت نے مزید کہا کہ اگر جسٹس خلیفہ نے کمیٹی کی ایماءپر یہ کہہ دیا کہ کمیٹیم اس نتیجہ پر پہنچی ہے کہ ثالثی کی مساعی جاری رکھنے کا کوئی جواز نہیں ہے آئینی بنچ 25جولائی سے سماعت شروع کر دے گی۔

1950میں حق ملکیت کا مقدمہ دائر کرنے والے گوپال سنگھ وشراد کے لواحقین میں سے ایک راجندر سنگھ نے 9جولائی کو عدالت کو مطلع کیا تھا کہ ثالثی میں کوئی پیش رفت نہیں ہوئی ہے۔

انہوں نے چیف جسٹس آف انڈیا سے کہا کہ ثالثی روک کر سپریم کورٹ میں گذشتہ 8سال سے معرض التوا میںپڑی اپیلوں پر سماعت شروع کی جائے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ayodhya dispute sc to begin hearing from july 25 if panel says talks are not working in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.