سپریم کورٹ کا اجودھیا تنازعہ کی جلد سماعت اور سبرامنیم سوامی کو تنازع میں فریق تسلیم کرنے سے انکار

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے اجودھیا اراضی تنازعہ کی جلد سماعت کرنے کے لیے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رہنما اور سابق مرکزی وزیر سبرامنیم سوامی کی درخواست منظور کرنے سے انکار کر دیا۔ سپریم کورٹ نے مسٹر سوامی کی استدعا ماننے سے انکار کرنے کے ساتھ ساتھ انہیں فریق تسلیم کرنے سے بھی انکار کر دیا اور وقت کی قلت کو جواز بنا کر معاملے کی جلد سماعت سے بھی انکار کر دیا۔ فریقین کی دلیل تھی کہ مسٹر سوامی اس مقدمے میں فریق ہی نہیں۔
عدالت نے جب مسٹر سوامی سے کہا کہ ”ہمیں آپ نے یہ نہیں بتایا کہ آپ اس اہم مقدمے میں فریق نہیں تو مسٹر سوامی نے بھی تسلیم کیا کہ وہ اس مقدمے میں فریق نہیں ہیں لیکن اسے وہ مذہبی عقیدے کا معاملہ سمجھتے ہیں اس لئے جلد سماعت کی درخواست گزار ہیں۔ مسٹر سوامی نے کہا کہ ان کا اس تنازعہ میں ملکیت کا کوئی دعویٰ نہیں ہے۔ انہوں نے درخواست صرف اپنے عبادت کرنے کے حق کی وجہ سے دائر کی ہے کہ تنازعہ کے تصفیہ میں تاخیر کے باعث ان کا وہاں پوجا کرنے کا بنیادی حق سلب ہو رہا ہے اس کیے انہوں نے دخل اندازی کی درخواست دی تھی ۔
اس معاملے کے اہم فریقمرحوم محمد ہاشم انصاری کے بیٹے نے سپریم کورٹ کو خط لکھ کر مسٹر سوامی کی طرف سے معاملے سے وابستہ تمام فریقوں کو کچھ بتائے بغیر فوری سماعت کی مخالفت کی تھی۔ واضح ر ہے کہ اجودھیا عبادتگاہ کیس کے سب سے پرانے فریق ہاشم انصاری کا95سال کی عمر میںگزشتہ سال جولائی میں انتقال ہو گیا تھا۔ مرحوم کو دل کا عارضہ لاحق تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ayodhya case wont fast track hearing you deceived us sc tells swamy in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply