ایودھیا مقدمہ کی آئندہ سماعت14مارچ تک موخر

نئی دہلی: سپریم کورٹ میں بابری مسجد ۔رام جنم بھومی مقدمہ کی حتمی سماعت 14مارچ تک کے لیے موقوف کر دی گئی کیونکہ جمعرت کو سماعت شروع ہوتے ہی سنی وقف بورڈ نے کہا کہ اسے دستاویزات کا ترجمہ کرنے کے لیے کچھ اور وقت چاہیے۔
جس پر سپریم کورٹ نے تمام دستاویزات7مارچ تک جمع کردینے کا حکم دیتے ہوئے سماعت14مارچ تک ملتوی کر دی۔ جمعرات کو سماعت کے دوران وقف بورڈ کی طرف سے کپل سبل موجود نہیں تھے۔ معاملہ مین ہندو مہاسبھا کی طرف سے پیش ہونے والے وکیل وشنو شنکر جین نے بتایا کہتمام فریق معاملہ کی روزانہ سماعت کے حق میں ہیں ۔
سپریم کورٹ نے تمام فریقوں سے کہا ہے کہ ہائی کورٹ ریکارڈ میں شامل تمام ویڈیوز کو دستاویزات میں شامل کرنے کہا ہے ۔ علاوہ ازیں عدالت عظمیٰ نے یہ بھی حکم دیا ہے کہ تمام فریق مقامی زبان میں ترجمہ کے ساتھ اپنی مذہبی کتاب بھی جمع کریں ۔
اسی درمیان چیف جسٹس دیپک مشرا نے راجیو دھون سے کہا کہ وہ صرف قانون کے تحت اراضی تنازعہ پر سماعت کریں گے۔ دوسری جانب اترپردیش حکومت کی جانب سے پیش ہونے والے تشار مہتہ نے راجیو دھون سے کہا کہ وہ معاملہ میں غلو سے بچیں۔واضح رہے کہ اس معاملہ کی سماعت تین ججی بنچ کر رہی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ayodhya case sc adjourns final hearing till march 14 in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply