آسام میں غیر ملکی قرار دیے گئے افراد کی چار ماہ کے اندر نشاندہی کی جائے:سپریم کورٹ

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے آج آسام غیر ملکی شہریت معاملہ میں اسٹیٹ کوآرڈینیٹر کوہدایت دی ہے کہ وہ چار مہینے کے اندر غیر ملکی قرار دیئے گئے باشندوں میں سے ان افراد کی نشاندہی کریں جن کے پاس اپنی شہریت ثابت کرنے کے لئے صرف گاؤں پنچایت کا سرٹیفکیٹ ہی واحد دستاویز ہے، تاکہ ان افراد کے معاملے میں کچھ طے کیا جا سکے۔عدالت نے اس معاملہ کی سماعت اب 12اکتوبر کو طے کی ہے۔ سپریم کورٹ کے ججز،جسٹس گگوئی اورجسٹس سنہا کی بنچ میں آج غیر ملکی شہریت معاملہ پر سماعت ہوئی۔سماعت کے دوران عدالت نے تین اہم باتیں کہیں۔ ایک تو یہ کہ سرکاریں بدل جانے سے سرکار کی پالیسی میں تبدیلی نہیں ہونی چاہئے۔
آج سرکار اس معاملہ کی مخالفت کر ر ہی ہے جبکہ پچھلی سرکار نے سب سے بات چیت اور رائے مشورے کے بعد ہی یہ پالیسی طے کی تھی۔ عدالت نے دوسری بات یہ کہی جو لوگ اس معاملہ میں مداخلت کار بننا چاہتے ہیں وہ اس وقت بھی عدالت میں تاخیر سے آئے تھے جب شہریت کے لیے 1971کو بنیاد ی سال بنانے کے معاملے کی سماعت چل رہی تھی۔عدالت نے بار بارکی ا س تاخیر کوغلط قرار دیا۔عدالت نے مزید کہا کہ ریاستی ہائی کورٹ کو منورہ بیگم کا معاملہ سننا چاہئے تھا اور مقدمہ فیصل کرنا چاہئے تھا۔ عدالت نے اب اس معاملے کی سماعت 12اکتوبر طے کی ہے۔ عدالت میں یہ بات سامنے آئی کہ جن 48لاکھ خواتین کے سر پر غیر ملکی شہریت کی تلوار لٹکی ہوئی ہے۔ ا ن میں تقریباً تین لاکھ مرد بھی شامل ہیں جنہوں نے اپنی شہریت کے ثبوت کے طور پر گاؤں پنچایت سرٹیفکیٹ ہی جمع کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ انکے پاس بھی ان کی شہریت کا کوئی اور ثبوت موجود نہیں ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Assam migrants sc wants all documents to be sorted by december 31 in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply