اروناچل پردیش میں کانگریس حکومت بحال،سپریم کورٹ نے صدر راج کوکلعدم قرار دیا

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے بدھ کے روز ایک تاریخی فیصلہ کرتے ہوئے اروناچل پردیش میں صدر راج کے نفاذ کو منسوخ کرکے ریاست میں فی الفورکانگریس حکومت بحال کرنے کا حکم جاری کردیا ہے۔ جسے مرکز کی بی جے پی حکومت کے لئے بہت بڑا جھٹکا سمجھا جارہا ہے۔
یہ حکم جسٹس جگدیش سنگھ کیہر کی قیادت والی 5 رکنی بنچ نے دیا ہے۔ عدالت نے اروناچل پردیش میں صدر راج کو رد کرتے ہوئے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ ریاستی حکومت کا ہٹایا جانا ’غیر قانونی اور غیر آئینی‘ تھا۔اتراکھنڈ کے بعد کانگریس پارٹی کو عالت عظمی سے یہ دوسری قانونی فتح ملی ہے۔ عدالت کے اس فیصلے سے ریاست میں نابم ٹوکی حکومت بحال ہوگئی ہے۔
عدالت نے اقتدار کی تبدیلی کے لئے گورنر کے فیصلے کو غلط ٹھہرایا ہے۔ آئینی بنچ نے کہا ہے کہ اروناچل پردیش اسمبلی کا اجلاس ایک ماہ قبل بلانے کا گورنر کا فیصلہ آئین کی خلاف ورزی ہے اور یہ رد کر دیے جانے کے قابل ہے۔
عدالت نے یہ بھی کہا کہ گورنر کے 9 دسمبر 2015 کے حکم پر عمل کرتے ہوئے اسمبلی نے جو بھی اقدامات اور فیصلے کئے وہ بھی منسوخ کئے جائیں گے اور 15 دسمبر 2015 سے پہلے کی صورتحال بحال کی جائے گی۔
قابل ذکر ہے کہ کانگریس کے باغی لیڈر کالیکھوپول نے بی جے پی کی مدد سے ریاست میں سرکار بنائی تھی۔ کانگریس کے باغی ممبران اسمبلی نے بی جے پی کے ساتھ مل کر وزیراعلی بنام ٹو کی کو ہٹادیا تھا جس کے بعد کانگریس نے عدالت عظمی سے رجوع کیا تھا۔(یو این آئی)

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Arunachal pradesh returns to congress in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply