اکیس لاکھ 47ہزار کروڑ روپے کے اخراجات کے تخمینے کے ساتھ 2017-18کا عام بجٹ پیش

نئی دہلی :مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے آج لوک سبھا میں اپنا چوتھا بجٹ اس تمہید کے ساتھ پیش کیا کہ انہوں نے دیہی علاقوں میں زیادہ خرچ کے مجموعی نقطہ نظر سے کام لیا ہے۔ مسٹر جیٹلی نے ، جو ڈیمونیٹائزیشن کے بعد پہلا بجٹ پیش کر رہے تھے، کہا کہ نوٹوں پر پابندی کا مقصد ایک نیا معمول سامنے لانا تھا جس میں مجموعی داخلی پیداوار ی منظر نامہ زیادہ وسیع، شفاف اور حقیقی ہو۔ انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ ڈیمونیٹائزیش کے اثرات آئندہ سال تک دراز نہیں ہوں گے۔ مقصد یہ تھا کہ ایک کروڑ لوگوں کو غریبی سے باہر نکالا جائے۔
اسی کے ساتھ انہوں نے یہ بھی کہا کہ بجٹ ہندستان کو بدلنے، طاقتور اور صاف ستھرا بنانے کے ارادے سے مرتب کیا گیا ہے۔قبل ازیں اپنی تقریر شروع کرتے ہوئے وزیرخزانہ نے کہا کہ ہندستان نے عالمی اقتصادی غیر یقینی صورتحال میں اپنے مائیکرو اقتصادی استحکام کو برقرار رکھا جو ہماری اقتصادی کامیابیوں کی مسلسل بنیاد بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسی سبق سے ہم عالمی منظرنامہ میں ایک نمایاں مقام رکھتے ہیں۔ بجٹ پیش کرنے سے عین پہلے سابق مرکزی وزیر اور پارلیمانی ممبر ای احمد کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ قبل ازیں وزیراعظم نریندر مودی کی صدارت میں ایک کابینی میٹنگ میں بجٹ کو منظوری دی گئی تھی۔ یہ پہلا موقع ہے کہ بجٹ یکم فروری کو پیش کیا جارہا ہے۔ ریلوے بجٹ الگ سے پیش کرنے کا سلسلہ بھی ختم کردیا گیا ہے اسے عام بجٹ میں ضم کردیا گیا ہے۔
.وزیر خزانہ نے کالے دھن کے خلاف کئے گئے اقدامات کو شاعرانہ انداز میں پیش کرتے ہوئے کہا”نئی دنیا ہے، نیا دور ہے، نئی ہے امنگ۔ کچھ تو پہلے کے طریقے تو کچھ ہیں آج کے رنگ“۔ ”روشنی جو آج آ کر ٹکرائی ہے، کالے دھن کو بھی تبدیل کرنا پڑا ہے اپنا رنگ“۔ انہوں نے سال18۔ 2017 میں کل21,47,000کروڑ روپے کے اخراجات کا بجٹ پیش کیا۔ اس میں دفاعی شعبے کے لیے86,484کروڑ روپے کے سرمایہ جاتی اخراجات سمیت کل2,74,114 کروڑ روپے کا الاٹمنٹ کیا گیا ہے۔ اس میں پنشن کی رقم شامل نہیں ہے۔ مالی خسارہ جی ڈی پی کا 3.2 فیصد اور سال 19۔ 2018 میں تین فیصد رکھنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ اگلے مالی سال میں ریوینیو خسارہ جی ڈی پی کا 1.9 فیصد رہنے کا اندازہ ہے۔ ہندوستان کی اقتصادی استحکام کو اقتصادی کامیابی کی بنیاد بتاتے ہوئے مسٹر جیٹلی نے کہا کہ اشیاء کی قیمتوں میں غیر یقینی صورتحال خاص طور پر خام تیل کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ دوسرا اہم چیلنج ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈاک خانوں کو فرنٹ آفس بنایا جائے گا۔
ھیڈ پوسٹ آفس سے پاسپورٹ بنیں گے۔ ملک میں ڈیجیٹل ادائیگی اور بلانقدی (کیش لیس) معیشت کو فروغ دیے جانے کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 125 ملین لوگوں نے بھیم اپلی کیشن اپنایا ہے۔ بھیم اپلی کیشن کو فروغ دینے کے لئے حکومت دو نئے اسکیم لائے گی۔ ریفرل بونس اسکیم اور تاجروں کے لئے کیش بیک اسکیم۔ بھیم اپلی کیشن، پٹرول پمپ سے لے کر سڑک نقل و حمل دفاتر تک قبول کئے جانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دیہی علاقوں کو براڈبینڈ کنکشن سے جوڑنے کا منصوبہ ’ بھارت نیٹ‘ کے لئے 10 ہزار کروڑ روپے کا انتظام کیا گیا ہے۔
غیر ملکی سرمایہ کاری کے فروغ بورڈ (ایف پی بی آئی) کو ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مفرور کی جائیداد قرق کرنے کے لئے قانون میں تبدیلی کی جائے گی۔ سال 2019 تک ایک کروڑ خاندانوں اور 50 ہزار گرام پنچایتوں کو غربت سے آزاد کرنے کے لئے بی پی ایل مشن شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گرام پنچایت سطح پر 500 کروڑ روپے کی رقم سے 14 لاکھ آئی سی ڈی ایس مراکز میں خواتین کی خود انحصاری مرکز قائم کئے جائیں گے۔..وزیر خزانہ نے تین لاکھ سے زیادہ کے نقد لین دین بند کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اب سیاسی جماعتیں بھی دو ہزار روپے سے زیادہ کا نقد چندہ قبول نہیں کر سکیں گی۔
انہوں نے 50 کروڑ روپے تک کا کاروبار کرنے والی چھوٹی کمپنیوں کے لئے ٹیکس کم کرکے 25 فیصد کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس سے 96 فیصد کمپنیوں کو فائدہ ہو گا۔ کم از کم متبادل ٹیکس (میٹ) ابھی ختم کرنا عملاً ممکن نہیں ہے اس لئے اسے 15 سال تک جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحویل اراضی پر ملنے والے معاوضے پر ٹیکس نہیں لگے گا۔ مسٹر جیٹلی نے کہا کہ نوٹ کی منسوخی کی وجہ سے انفرادی انکم ٹیکس میں 34.8 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Arun jaitley hails demonetisation terms it bold and decisive measure in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply