سکھ مخالف فسادات کی تفتیش بند کردینے کے فیصلہ کی جانچ کے لیے سپریم کورٹ نے دوججی کمیٹی تشکیل دی

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے 1984 کے سکھ مخالف فسادات سے متعلق 199 معاملات کو بند کر دینے کے فیصلے کی تحقیقات کے لئے دو سابق ججوں کی کمیٹی تشکیل دی ہے۔ جسٹس دیپک مشرا کی بنچ نے آج کہا کہ یہ کمیٹی فسادات سے متعلق ان 42 معاملات کی بھی جانچ کرے گی، جسے بند کرنے کی خصوصی تفتیشی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے فیصلہ کیا ہے۔ بنچ نے واضح کیا کہ کمیٹی یہ طے کرے گی کہ جن معاملات میں ایس آئی ٹی نے داخل دفتر رپورٹ داخل کی ہے وہ مناسب ہے یا نہیں۔
عدالت نے کمیٹی کو سبھی معاملات کا جائزہ لے کر تین ماہ کے اندر اندر رپورٹ پیش کرنے کا بھی حکم دیا۔ اب اس معاملے کی سماعت 28 نومبر کو ہوگی۔ عدالت نے گزشتہ 24 مارچ کو مرکزی حکومت کو ان 199 مقدمات کی فائلیں پیش کرنے کا مرکزی حکومت کو حکم دیا تھا، جنہیں وزارت داخلہ کی طرف سے قائم ایس آئی ٹی نے بند کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ ایس آئی ٹی کی سربراہی 1986 بیچ کے انڈین پولیس سروس کے افسر پرمود استھانہ کر رہے ہیں، جبکہ ریٹائرڈ ضلع و سیشن جج راکیش کپور اور دہلی پولیس کے افسر کمار گیانیش اس کے رکن ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Anti sikh riots sc appoints panel to examine 241 cases in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply