انا ہزارے کی دہلی کے رام لیلا میدان میں بے مدت بھوک ہڑتال شروع

نئی دہلی :’ گورے انگریز گئے کالے انگریز آگئے‘۔ یہ بات لوک پال اور کاشتکاروں کے حق میں تحریک چلانے والے انا ہزارے نے دہلی کے رام لیلا میدان میں ایک بڑے مجمع سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ ملک کے جیالوں نے جان کی قربانی دے کر انگریزوں کو ملک سے بھگایا لیکن ملک میں جمہوریت آج بھی نہیں ہے کسانوں کو کم ا زکم قیمت اور مقررہ آمدن کی وکالت کر ہے انا ہزارے لوک پال کے تقرر اور کسانوں کے حق کے لیے ملک گیر پیمانے پر تحریک چلا رہے ہیں۔اور اس معاملہ پر حکومت کے خلاف مہم کی ایک کڑی کے طور پر انہوں نے رام لیلا میدان میں غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال شروع کر دی۔
انا ہزارے جب دہلی کے رام لیلا میدان پہنچے تو کئی اہم سماجی و سیاسی شخصیات بھی ان کے ہمراہ ہو گئیں اور کچھ پہلے ہی سے رام لیلا میدان میں موجود تھیں۔کرناٹک کے سابق لوک آیکت و سپریم کورٹ کے سابق جج این سنتوش ہیگڑے بھی اس تحریک میں شامل ہونے کے لیے رام لیلا میدان پہنچ گئے۔
حالانکہ انا نے کہہ دیا تھا کہ بھلے ہی اس بار کوئی ان کےساتھ نہ آئے وہ اکیلے ہی رام لیلا میدان میں بیٹھے رہیںگے۔اور جب تک ان کا مطالبہ تسلیم نہیں کر لیا جاتا وہ رام لیلا میدان سے ٹس سے مس نہ ہوں گے۔اور مطالبات پورے ہونے تک بے مدت بھوک ہڑتال جاری رہے گی۔انا نے کہا کہ انہوں نے حکومت کو42بار مکتوب ارسال کیے لیکن حکومت نے ان کی ایک نہ سنی۔اور انہیں مجبوراً دھرنے او غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال پر بیٹھنے کا قدم اٹھانا پڑا۔

Title: anna hazare begins indefinite hunger strike fast for lokpal | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply