فوجی نقل و حرکت جاننے کے لیے مقامی باشندوں کوکالیں موصول ہونے کے بعد ہند چین سرحد پر الرٹ

نئی دہلی: ہند چین سرحد سے متصل دیہات کے رہائشیوں بشمول سر پنچ کو لائن آف کنٹرول(ایل او سی) پر ہندوستانی فوج کی تعینات سے متعلق معلومات حاصل کرنے کے لیے چین یا پاکستان سے مشتبہ کالیں موصول ہونے کے بعد ہند چین سرحد پر ہندوستانی فوج کو الرٹ کر دیا گیا ہے۔
سرکاری ذرائع کے مطابق تیلی فون کرنے والا خود کو کرنل یا ایک مقامی افسر ظاہر کرتا ہے اور فون رسیو کرنے والے سے معلوم کرتا ہے کہ وہ یہ بتائے کہ وہاں فوج مستعد ہے یا نہیں ۔ علاقہ میں کس کس جگہ فوجی جوان تعینات کیے گئے ہیں اور وہ کن اوقات میں گشت کرتے ہیں۔ حال ہی میں چانگ لا اور سانگتے کے درمیان سمندر سے13500فٹ کی بلندی پر واقع دربوک گاو¿ںکے سرپنچ کو ایک کال موصول ہوئی جس میں فون کرنے والا شخص یہ معلوم کرنا چاہ رہا تھا کہ آیا فوج کے ساتھ زیر التوا معاملات طے پا گئے یا نہیں۔
یہ سرپنچ کو ، جو یہ کال آنے کے وقت ایک فوجی کیمپ میں ہی بیٹھا تھا ، کال کرنے والے پر شک ہو گیا اور اس نے کالر سے اپنی شناخت بتانے کہا۔کالر کے یہ بتانے کے باوجود کہ وہ ڈپٹی کمشنر کے دفتر سے بول رہا ہے، اسٹانزن نام کے سرپنچ نے اسے یہ کہہ کر جھڑک دیا کہ وہ اس ضمن میںجو معلومات چاہتا ہے فوج سے خود فون کر کے کیوںنہیں لے لیتا۔ اس نے مزید کہا کہ کالر کے بے تکے سوالات سے مجھے شک ہو گیا اور میں نے ایک فوجی افسر کو اس کی اطلاع دی۔
بعد میں فوج کو پتہ چلا کہ ہند۔ چین سرحد پر دیہات میں متعدد لوگوں کو ایسے نامعلوم نمبروں سے فون آرہے ہیں اور کچھ معاملات میں دیہاتیوں نے سادہ لوحی میں کالر کو کچھ اطلاعات بھی دیدی تھیں۔

Title: alert sounded near indo china border | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply