تلنگانہ حکومت کے اعتراف کے بعد وزیر اعظم کو وینکیا نائیڈو پر لگے الزامات کا جواب دینا چاہئے:کانگریس

نئی دہلی: کانگریس نے آج کہا کہ تلنگانہ حکومت نے اعتراف کیا ہے کہ قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے نائب صدر کے عہدے کے امیدوار ایم وینکیا نائیڈو کے بیٹے اور بیٹی کو فائدہ پہنچانے کے لئے قوانین کی خلاف ورزی کی گئی ہے لہذا وزیر اعظم نریندر مودی کو اس کا جواب دینا چاہئے۔ کانگریس کمیونیکیشن سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجےوالا نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ تلنگانہ حکومت نے کہا ہے کہ مسٹر نائیڈو کی بیٹی کے ٹرسٹ سورن بھارتی کو تعمیری فیس میں 246 کروڑ روپے کی چھوٹ دی گئی تھی۔ خود مسٹر نائیڈو نے مختصر جواب میں اعتراف کیا ہے کہ ان کی بیٹی کے ٹرسٹ کے ساتھ ہی 16 دیگر ٹرسٹوں کو بھی اس کا فائدہ ہوا ہے۔
مسٹر سرجےوالا نے الزام لگایا کہ سورن بھارتی ٹرسٹ کو بیرون ملک سے چندہ لینے کے معاملے میں قوانین کی خلاف ورزی کرنے کے معاملے میں نوٹس موصول ہوا ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ ایسے ٹرسٹ کو کس بنیاد پر یہ رعایت دی گئی ہے جسے پہلے ہی قوانین کی خلاف ورزی کا مجرم ہونے کے معاملے میں نوٹس دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت نے یہ بھی اعتراف کیا ہے کہ مسٹر نائیڈو کے بیٹے کی کمپنیہرشا ٹویوٹا سے ریاستی حکومت کو 350 گاڑیوں کی فراہمی کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت نے ایک اور کمپنی رادھاکرشن موٹرز سے بھی اتنی ہی گاڑی خریدے تھے لیکنہرشا کو یہ کام بغیر ٹینڈر کے دیا گیا جبکہ رادھاکرشن کو ٹینڈر کے ذریعہ گاڑیوں کی فراہمی کا کام سونپا گیا ہے۔
مسٹر سرجےوالا نے کہا کہ اسی طرح سے بھوپال میں کشابھؤ ٹھاکرے اسمارک ٹرسٹ کی زمین الاٹمنٹ پر مسٹر نائیڈو نے کہا ہے کہ پارٹی صدر ہونے کے ناطے وہ ٹرسٹ کے صدر تھے۔ اس کا مطلب بھوپال میں ہوئے اس گھوٹالے میں بی جے پی شامل رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان تمام معاملات میں مسٹر مودی اور بی جے پی صدر امت شاہ کو جواب دینا چاہئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ahead of vp poll cong targets venkaiah naidu with graft charges in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply