حریت کے نازیبا رویہ کے باعث مرکزعلیحدگی پسندوں کو دی گئیں سہولیات واپس لے سکتا ہے

نئی دہلی: (یواین آئی) بحالت مجبوری مرکزی حکومت وادی کشمیر میں پھیلی بدامنی کے لئے ذمہ دار علیحدگی پسند رہنماؤں کی پکڑ دھکڑ کرنے کے ساتھ ساتھ ان کو دی جا رہی تما م سہولتیں واپس لے سکتی ہیں۔
مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج یہاں وزیر اعظم نریندر مودی کو کشمیر کے حالات کی جانکاری دی۔ مسٹر سنگھ کی قیادت میں ایک کل جماعتی وفد کشمیر کی صورتحال کا جائزہ لینے گیا تھا۔ وہاں سے واپس آنے کے بعد مسٹر سنگھ نے آج وزیر اعظم سے ملاقات کر کے انہیں صورت حال سے آگاہ کیا۔ذرائع کے مطابق علیحدگی پسند لیڈروں کو اس وقت پولیس سیکورٹی سمیت خصوصی سہولیات مل رہی ہیں۔ علیحدگی پسند رہنماؤں کی حفاظت میں قریب 900 سیکورٹی جوان تعینات ہیں۔
اس کے علاوہ انہیں ٹراویل الاؤنس اور میڈیکل الاؤنس دیے جاتے ہیں۔ ان لیڈروں کو مفت فضائی ٹکٹ، ہوٹلوں میں ٹھہرنے کا خرچ اور ٹیکسی کا کرایہ واپس ملنے کی بھی سہولیات ہیں۔ وادی میں موجودہ بدامنی میں علیحدگی پسند رہنماؤں کے رول کے تعلق سے مرکز کو تشویش ہے۔
ان علیحدگی پسند لیڈروں نے ان سے ملنے گئے کل جماعتی وفد میں شامل کچھ ارکان سے ملنے سے بھی انکار کر دیا تھا۔ قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) علیحدگی پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی اور ان کے بیٹے نعیم گیلانی کو کی جا رہی فنڈنگ کی تحقیقات کر رہی ہے۔ دونوں کو وادی کی موجودہ بدامنی کیلئے ذمہ دار مانا جا رہا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: After hurriyat snub centre to crack down on separatists withdraw security cover in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply