آرتھرائٹس ( گھٹیا جوڑ)سے بچنے کے لئے چلنا پھرناضروری

آج کے طرز زندگی میں کاہلی آجانے کے باعثلوگوں کا جسم اور ہڈیاں متاثر ہونے لگی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ آرتھرائٹس کا مرض کی ایک وبا کی شکل اختیار کر رہا ہے۔

واضح رہے کے آرتھرائٹس میں جوڑوں میں سوجن آجا نے سے مریض کو چلنے پھرنے میں پریشانی ہونے لگتی ہے۔ عمر کے ساتھ ہونے والا آرتھرائٹس آسٹیو آرتھرائٹس کہلاتا ہے۔ آسٹیو آرتھرائٹس ہندوستان میں عام طور پر 55سے 60سال کے درمیان کی عمر میں ہوتا ہے، لیکن آج کے دور میں کم عمر میں بھی لوگ آرتھریٹس کے شکار ہو رہے ہیں۔

نوئیڈا میں واقع جی پی اسپتال کے ہڈیوں اور جوڑوں کے درد کے امراض کے شعبہ کے ایسوسی ایٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر گوراو راٹھور کا کہنا ہے کہ اکثر لوگ آسٹیوپروسیس اور آسٹیو آرتھرائٹس کو ایک ہی سمجھ لیتے ہیں۔ آسٹیو آرتھرائٹس میں جوڑوں میں ڈیجنریشن ہونے لگتا ہے ،وہیں آسٹیو پروسیس میں ہڈیوں میں گوشت کم ہونے لگتا ہے اور ہڈیوں ٹوٹنے یا فریکچر ہونے کا خطرہ پیدا ہو جاتاہے۔

آسٹیوپروسیس کو خاموش مرض کہا جاسکتا ہے کیونکہ اکثر سالوں تک مریض کو اس پتہ نہیں چل پاتا ہے، جب ہڈیاں ٹوٹنے لگتی ہیں تب ا س بیماری سے روشناش ہوتا ہے۔ اس مرض میں مریض کو درد تبھی ہوتا ہے جب فریکچر ہو جاتا ہے۔ ڈاکٹر راٹھور کے مطابق آرتھرائٹس کی سب سے عام قسم ہے آسٹیو آرتھرائٹس ۔ ا سکا اثر جوڑوں ، خاص طور سے کولہے ، گھٹنے ، گردن ، پیٹھ کے نیچلے حصے ، ہاتھوں اور پیروں پر پڑتا ہے ۔ آسٹیو آرتھرائٹس عام طور پر کارٹیلج جوائنٹ میں ہوتا ہے۔

کارٹیلج ہڈیوں کی سطح پر موجود سافٹ ٹیشو ہے ،جو آرتھرائٹس کی وجہ سے پتلا اور کھردراا ہونے لگتا ہے اور ہڈیاں ایک دوسرے سے رگڑکھانے لگتی ہیں جس سے چلنا پھرنا دوار ہو جاتا ہے۔ ڈاکٹرراٹھور کے مطابق آرتھرائٹس کی اہم وجہ طرز زندگی سے وابستہ ہے۔ کھانے پینے کے طور طریقے بھی اس بیماری کی وجہ بن چکے ہیں ۔

آج کے دورمیں شہری لوگ کم چلتے پھرتے ہیں جس کی وجہ سے جسمانی ورزش کم ہوگئی ہے۔ خواتین کئی وجوہ سے آرتھرائٹس کا شکار ہو رہی ہیں ، جیسے چلنے پھرنے میں کمی آج کل عام بات ہونے لگی ہے۔ ڈاکٹر راٹھور کے مطابق آرتھرائٹس سے اکثر سب سے زیادہ اثر گھٹنوں ، کولہوں کے جوڑوں پر پڑتا ہے۔

مسلسل بیٹھے رہنے کی وجہ سے موٹاپا بھی بڑھتا ہے جو آرتھرائٹس کی اہم وجہوں میں سے ایک ہے۔ آرتھرائٹس کا اثر مریض کے چلنے پھرنے کی قوت ، روزمرہ کے کاموں پرپڑتا ہے۔ وقت کے ساتھ کام چلنے کی وجہ سے اس کے دل پر اثر پڑنے لگتا ہے اور ذیابیطس کے بھی خطرات بڑھ جاتے ہیں۔

ڈاکٹر راٹھور کے مطابق آرتھرائٹس سے بچنے کا سب سے بہترین اور آسان طریقہ ہے اپنے طرز زندگی پر قابو پانا ۔ ا سکے لئے کھانے پینے میں کاربورہائٹیڈ کا استعمال محدود مقدار میں کریں۔ ٹرانس ۔ فیٹ کے استعمال سے بچیں۔

خیال رکھیں کہ آپ کے کھانے پینے میں پروٹین کی مقدار بھی نارمل ہو۔ آرتھرائٹس کی شروعات میں ہی اگر ورزش شروع کر دی جائے توگھٹنوں کو خراب ہونے سے بچایا جا سکتا ہے۔ جسمانی کسرت کی مقدار بڑھا کر اپنی صحت میں سدھار لا سکتے ہیں۔

Read all Latest health news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from health and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Know the ways to keep arthritis away in younger age in Urdu | In Category: صحت Health Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.