ہیپا ٹائٹس مرض سے مردوں میں صلاحیت تولید ختم ہونے کا خطرہ پیدا ہو سکتا ہے

نئی دہلی: عالمی صحت تنظیم ( ڈبلیو ایچ او) کیطرف سے حال ہی میں جاری اعدادوشمار میں انکشاف ہوا ہے کہ دنیا بھر میں تقریباً36کروڑ لوگ ہیپا ٹائٹس بی یا سی کے شکار ہیں۔

ہیپا ٹائٹس لیور میں سوجن باعث ہوتا ہے ۔ہیپا ٹائٹس سے مردوں میں بانجھ پن کا بھی خطرہ ہو سکتا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ سے یہ پتہ چلا ہے کہ ہیپا ٹائٹس بی وائرس والے مردوں میں بانچھ پن کا خدشہ 1.59گنا زیادہ رہتا ہے۔

ہیپا ٹائٹس بی وائرس پروٹین نطفہ کی موبلٹی اور نطفہ کی شرح پیداوارکو کم کرنے کےلئے جانا جاتا ہے۔ دہلی میں آئی وی ایف اور انفرٹلیٹی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر رشی کیش ڈی پائی نے کہا کہ ہیپا ٹائٹس کا خواتین کے اووری اور بچہ دانی کے معمول کے کام پر کوئی اثر انداز نہیں ہوتا ہے۔

حالانکہ اس وائرس سے مردوں میں نطفہ اسپرم اٹوجینیس پر منفی اثر پڑتا ہے۔ اس نطفہ کی تعداد ، ٹسٹو اسٹورون کی سطح ، موبلٹی، فیسبلٹی میں کمی واقعی ہوتی ہے جس سے پروڈکٹیوٹی اور ری پروڈکشن کی صلاحیت پر اثر پڑتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج کے دور میں ضرورت ہے کہ بانچھ پن جوڑے میں ایچ بی ایس اے جی اور ایچ سی وی کے ٹیسٹ کی پیشکش کی جائے ۔ اس سے انہیں ری پروڈکشن کی صلاحیت پر کچھ وضاحت حاصل کرنے میں معاون ثابت ہوگا اور وہ اپنے ساتھی یا بچے کو اس مرض کو منتقل کرنے سے بچ سکیں گے۔

ڈاکٹر رشی کہتے ہیں کہ ہیپا ٹائٹس کے لئے مثبت اعلان ہو چکے اور بانچھ پن کا علاج چاہنے والے جوڑوں کو صلاح کی ضرورت ہے۔ اس سے انہیں بیماری کے ٹرانسمیشن کے خطرے کو سمجھنے میں مدد ملے گی۔ کسی بھی سپورٹنگ بریڈنگ تکنیک کے مشورہ دیئے جانے چاہئے جس سے ایک بار میں ہی مناسب علاج کیا جائے تاکہ ان کے مسئلے کم ہوں۔

Read all Latest health news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from health and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hepatitis increases risk of infertility in men in Urdu | In Category: صحت Health Urdu News

Leave a Reply