فضائی آلودگی سے دماغ کو بھی نقصان پہنچ سکتا ہے

لندن: ایک نئی تحقیق سے انکشاف ہوا ہے کہ کہ فضائی آلودگی کی وجہ سے دماغ کو بھی خطرہ ہو سکتا ہے۔ برطانیہ کے لنکیسٹر یونیورسٹی کے سائنسدانوں کی طرف سے کئے گئے ایک مطالعہ سے پتہ چلا ہے کہ فضائی آلودگی کی وجہ سے دماغ کو بھی خطرہ ہو سکتا ہے۔ تحقیق میں فضائی آلودگی سے ہونے والے خطرات کے بارے میں بتایا گیا ہے۔
ابھی تک فضائی آلودگی کی وجہ سے دل اور سانس کی بیماری کے بارے میں پتہ تھا لیکن نئی تحقیق نے اس سے ہونے والے دیگر مسائل کی طرف بھی توجہ مرکوز کی ہے۔ لنکیسٹر یونیورسٹی کی پروفیسر اور محقق ٹیم کی رکن باربرا ماہیر نے کہا ”ہمیں دماغ کے نمونے میں فضائی آلودگی کے لاکھوں ذرات ملے ہیں۔ ایک ملی گرام دماغ میں میگنیٹ? کے لاکھوں کے ذرات ملے ہیں جس سے دماغ کو خطرہ ہو سکتا ہے۔ اس سے دماغ کو نقصان پہنچنے کا غالب امکان ہے“۔
محترمہ ماہیر کے مطابق سانس کے ذریعے جسم میں پہنچنے والی آلودگی کے ذرات کا بڑا حصہ تو سانس کی نلی میں جاتا ہے لیکن اس کا ایک چھوٹا سا حصہ پٹھوں سے ہوتے ہوئے دماغ میں بھی پہنچتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحقیق کے دورانپتہ چلا کہ میگنیٹک آلودگی کے ذرات دماغ میں پہنچنے والی آوازوں اور اشاروں کو روک سکتے ہیں، جس سے الزائمر جیسی بیماری ہو سکتی ہے۔ تاہم، الزائمر کے ساتھ اس کے منسلک ہونے کی تصدیق ابھی پوری طرح سے نہیں کی جا سکی ہے۔

Read all Latest health news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from health and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Could air pollution cause brain damage in Urdu | In Category: صحت Health Urdu News

Leave a Reply