غزل:

زیڈ ایچ شیخ

تجھے اے زندگی مجھ سے بتا گلہ کیا ہے
تجھ پہ مرنے کا آخر کویہ صلہ کیا ہے

یہ مانا آبلہ پائی نہیں ہے کھیل مگر
جو نقشِ پا نہیں بنتا وہ آبلہ کیا ہے

یہ آندھیاں تو سدا حوصلہ بڑھاتی تھیں
پتا نہیں یہ سیاست کا زلزلہ کیا ہے

وہ سنگ بدست مقابل تمھاری فوجوں کے
تمھارا حوصلہ کیا ہے تمھارا ولولہ کیا ہے

امنگیں لاکھ جواں ہوں ترنگیں لاکھ حسیں
جنون شوق نہ حاصل تو حوصلہ کیا ہے

ذرا سی بات پہ تج دی رفاقتیں تم نے
ہمارے درمیاں ورنہ یہ فاصلہ کیا ہے

سنگ بدست ہیں احباب، میں سایہ فگن
دعا نہیں نہ سہی خیر یہ صلہ کیا ہے

بہت دنوں سے نہیں آنکھ مری نم یاروں
تمھاری مشق ستم کا یہ سلسلہ کیا ہے

Read all Latest ghazal poetry in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from ghazal poetry and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Tujhe aye zindagi mujh se bata gila kya haighazal in Urdu | In Category: غزلیں و شاعری Ghazal poetry Urdu

Leave a Reply