غزل: آج تک بہکا نہیں باہر سے دیوانہ ترا

لطف الرحمن
آج تک بہکا نہیں باہر سے دیوانہ ترا
حوصلے میری نگاہوں کے ہیں پیمانہ ترا

رات بھر شبنم کی آنکھوں سے سحر کی مانگ میں
میں جسے لکھتا رہا وہ بھی تھا افسانہ ترا

یہ ترے دریا سلامت یہ ترے بادل بخیر
لٹ رہے ہیں خم پہ خم ثابت ہے مے خانہ ترا

آنسوو¿ں کی آب جو حائل ہے ورنہ لاؤں میں
میری نظروں کا شرر آنکھوں کا خس خانہ ترا

دل میں دھڑکن کی طرح سانسوں میں خوشبو کی طرح
اب خیالوں میں بھی کب آتا ہے وہ آنا ترا

اول اول تو تمازت دوپہر کے دشت کی
آخر آخر اپنی نظروں کو جھکا جانا ترا

ریزہ ریزہ کر گئی پتھر کو بھی شبنم کی چوٹ
ہائے کس دل سے مگر وہ مجھ کو سمجھانا ترا

Read all Latest ghazal poetry in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from ghazal poetry and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lutf ur rahman ghazalsaaj tak bahkaa nahiin baahar se diivaana tiraa in Urdu | In Category: غزلیں و شاعری Ghazal poetry Urdu

Leave a Reply