غزل:پوچھے کوئی ان سے غم کے مزے جو پیار کی باتیں کرتے ہیں

شکیل بدایونی

اے عشق یہ سب دنیا والے بیکار کی باتیں کرتے ہیں
پائل کے غموں کا علم نہیں، جھنکار کی باتیں کرتے ہیں

ہر دل میں چھپا ہے تیر کوئی، ہر پاؤں میں ہے زنجیر کوئی
پوچھے کوئی ان سے غم کے مزے جو پیار کی باتیں کرتے ہیں

الفت کے نئے دیوانوں کو کس طرح سے کوئی سمجھائے
نظروں پہ لگی ہے پابندی، دیدار کی باتیں کرتے ہیں

بھونرے ہیں اگر مدہوش تو کیا، پروانے بھی ہیں خاموش تو کیا
سب پیار کے نغمے گاتے ہیں، سب یار کی باتیں کرتے ہیں

Read all Latest ghazal poetry in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from ghazal poetry and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ghazal shakil badauni in Urdu | In Category: غزلیں و شاعری Ghazal poetry Urdu
What do you think? Write Your Comment