غزل :میں ہوں کہاں اور تو ہے کہاں

اسماءطارق ،گجرات (پاکستان)

سات سمندر پار جانے تو ہے کہاں
میں ہوں کہاں اور تو ہے کہاں

میرے دیس کی ہواؤں ! گر گزر ہو اسکے شہر سے
اسکی خبر لیتی آنا کچھ میرا بھی حال سنانا

گر وہ پوچھے میرا تو اسے بتانا
قابل کر رہا ہوں خود کو تیرے

اپنے نام کی مالا جو تم نے پہنائی تھی
اسی مالا پہ لٹکے نام کی لاج رکھنا

کی ہے جو روشنی اسے بجھا نہ دینا
اپنا سمجھا ہے تمہیں، بیگانہ کر نہ دینا

گر ٹوٹا یہ بھروسہ ہم بھی ٹوٹ جائیں گے
گر اب ٹوٹے تو مر ہی جائیں گے

پھر نہ کرنا شکایت، نہ سنیں گے نہ سنائیں گے
بس پھر لوٹ جائیں گے اور واپس نہ آئیں گے

ای میل:trqasma2511@gmail.com

Read all Latest ghazal poetry in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from ghazal poetry and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ghazal mein hoon kahan aur too hai kahan in Urdu | In Category: غزلیں و شاعری Ghazal poetry Urdu
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.