معروف نغمہ نگار نقش لائل پوری انتقال کر گئے

ممبئی:ہندی فلموں کے مشہورومعروف نغمہ نگار نقش لائل پوری کا طویل علالت کے بعد89برس کی عمر میں اتوار کو ممبئی میں انتقال ہوگیا۔ نقش لائل پوری 24فروری1928کوفیصل آبادسے نزدیک لائل پور(پاکستان) میں پیدا ہوئے۔ان کا اصل نام جسونت رائے شرما تھا۔ ان کے والد ایک انجینئر تھے اور ان کی خواہش تھی کہ وہ ان کے نقش قدم پر چلیں۔ لیکن وہ اپنے اردواستاد کی مددسے لاہور چلے آئے اورادب کا مطالعہ شروع کردیااور مشاعروں میں توجہ کا مرکز بننے لگے۔
ہندوستان کی آزاد ی کے بعد نقش لائل پوری اپنے اہل خانہ کے ہمراہ لکھنو منتقل ہوگئے۔ 1951میں ممبئی کا رخ کیاتاکہ فلموں میں اپنا کیریئر بناسکیں جس میں انہیں کامیابی حاصل ہوئی۔ انہوں نے چیتنا(1970)،رسم الفت کو نبھانا تو نبھائے کیسے(دل کی راہیں1973)،الفت میں زمانے کی (کال گرل 1974)اور یہ ملاقات ایک بہانا ہے(خاندان1979)سمیت متعددفلموں کے گانے لکھے۔انہوں نے 40پنجابی فلموں میں تقریباً 350نغمے تحریر کئے۔ان کا شعرکافی پسند کیا جاتا ہے۔’
ہم نے کیا پا لیا ہندو یا مسلماں ہو کر ۔کیوں نہ انساں سے محبت کریں انساں ہو کر‘۔نقش لائل پوری نے بہترین نغمے قلم بند کیے جوکہ ہندوستانی فلموں کے سنہری دور کی علامت ہیں۔ دھنی چنری موری ہائے رے،میں تو ہرموڑ پر تجھ کو ڈھونڈوں گا سدا،چاندنی رات میں ایک بار تجھے دیکھا ہے،یہ دور شیلندر،ساحر لدھیانوی ،حسرت جے پوراور مجروح سلطانپوری کا دورتھا۔ نقش لائل پوری کا کہنا تھاکہ ”میں نے اس تخلص سے اتنی شہرت حاصل کی کہ لو گ مجھے اصل نام سے نہیں جانتے تھے۔
میں نے کبھی اپنی مذہبی شناخت ظاہر نہیں کی۔مجھے مسلمان سمجھاجاتا تھا۔ ایک بار اسٹوڈیو میں آشا بھونسلے کو حیرت ہوئی کہ میں مسلمان نہیں ہوں۔دراصل میں نے اپنی اردوکو بہتر سے بہتر کرنے کے لیے سعادت حسن منٹو کے افسانے پڑھے کیونکہ ان کا کہنا تھا کہ جب کوئی پنجابی اردو بولتا ہے تو ایسا لگتا ہے ،جیسے جھوٹ بول رہا ہو۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Urdu poet b town lyricist naqsh lyallpuri is no more in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News

Leave a Reply