جو بھی ہو تم خد ا کی قسم لاجواب ہو“کے خالق شکیل بدایونی کی 100ویں سالگرہ

ممبئی:مشہور شاعر اور نغمہ نگار شکیل بدایونی کا اپنی زندگی کے تئیں نظریہ ان کی لکھی ہوئی چند سطروں میں نظرآتا ہے۔ ”میں شکیل دل کا ہوں ترجماں کہ محبت کا ہوں رازداں، مجھے فخر ہے میری شاعری مری زندگی سے جدا نہیں“ ۔
اترپردیش کے بدایوں قصبے میں 3اگست 1916کو پیدا ہوئے شکیل احمد عرف شکیل بدایونی کی بدھ کے روز ادبی وفلمی دنیا 100ویں سالگرہ کی تیاریاں کر رہی ہے۔شکیل بدایونی کے فلمی دنیا کے سفر پر ایک سرسری نظر ڈالی جائے تواس سے پتہ چلتا ہے کہ کتنے مختصر عرصہ میں انہوں نے شہرت کی پبندیوں کو چھو لیا تھا۔
شکیل بی اے پاس کرنے کے بعد 1942میں دہلی پہنچے جہاں انہوں نے محکمہ آبکاری میں آبکاری افسر کے طور پر پہلی ملازمت کی۔اس درمیان وہ مشاعروں میں بھی حصہ لیتے رہے جس سے انہیں پوری ملک میں شہرت حاصل ہوئی۔ اپنی شاعری کی بے پناہ کامیابی سے پرجوش شکیل بدایونی نے نوکری چھوڑ دی اور 1946 میں دہلی سے ممبئی آگئے۔ممبئی میں ان کی ملاقات نوشاد سے ہوئی۔نوشاد کے کہنے پر شکیل نے ”ہم دل کا افسانہ دنیا کو سنا دیں گے،ہر دل میں محبت کی آگ لگا دیں گے “نغمہ لکھا تھا۔
یہ نغمہ نوشاد صاحب کو کافی پسندآیاجس کے بعد انہیں فوراً کاردار صاحب کی فلم ”درد“کےلئے سائن کرلیاگیا۔ 1947میں اپنی پہلی ہی فلم”درد“میں ”افسانہ لکھ رہی ہوں“نغمہ کی زبردست کامیابی سے شکیل بدایونی کامیابی کی بلندیوں پر پہنچ گئے۔ شکیل بدایونی کے فلمی سفر پر اگر ایک نظر ڈالی جائے تو معلوم ہوگا کہ انہوں نے سب سے زیادہ فلمیں موسیقار نوشاد کے ساتھ ہی کی تھیں۔ان دونوں کی جوڑی خوب جمی اور ان کے لکھے نغمے سوپر ہٹ ہوئے۔
شکیل اور نوشاد کی جوڑی والے نغموں میں۔تو میرا چاند میں تیری چاندنی ،سہانی رات ڈھل چکی ،اے دنیا کے رکھوالے،من تڑپت ہری درشن کو ،دنیا میں آئے ہیں تو جینا ہی پڑے گا،دو ستاروں کا زمیں پر ہے ملن آج کی رات ،مدھوبن میں رادھیکا ناچے رے،جب پیار کیا تو ڈرنا کیا،نین لڑجئی ہے تو من وا ما کسک ہوئبئے کری،توڑنے والے تجھے دل ڈھونڈ رہا ہے ،تیرے حسن کی کیا تعریف کروں ،دلربا میں نے تیرے پیار میں کیا کیا نہ کیا،کوئی ساغر دل کو بہلاتا نہیں وغیرہ قابل ذکر ہیں۔
شکیل بدایونی کو اپنے نغموں کےلئے تین بار فلم فیئر ایوارڈ سے نوازا گیا۔ان میں 1960 میں ریلیز ہوئی چودھویں کا چاند فلم کے نغمے چودھویں کا چاند ہو یاآفتاب ہو ،1961میں ریلیز ہوئی فلم گھرانہ کے نغمے حسن والے تیرا جواب نہیں اور 1962میں بیس سال بعد فلم کے نغمے کہیں دیپ جلے کہیں دل ،کےلئے فلم فیئر ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Tribute to search results shakeel badayuni at his birthday anniversary in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News

Leave a Reply