صہیب الیاسی کے ’ انڈیاز موسٹ وانٹیڈ‘ شو میں بیٹی شریک میزبان ہوگی

نئی دہلی: شو ’ انڈیاز موسٹ وانٹیڈ‘ کے مشہور اینکر صہیب الیاسی کو گزشتہ دنوں اپنی بیوی کے قتل کیس میں بری کر دیا گیا ہے اور اب وہ اپنا ٹی وی شو ’انڈیاز موسٹ وانٹیڈ‘ دوبارہ شروع کر نے کی تیاری میں ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ اس بار صہیب اس شو کو اکیلے نہیں ہوسٹ کریں گے بلکہ اس میں ان کی بیٹی عالیہ شریک میزبان ہوں گی۔

ایک بیان میں صہیب نے کہا کہ ان کا پسندیدہ شو ان کے ذہن سے نکل نہیں پایا ہے وہ اس شو کو دوبارہ شروع کرنا چاہتے ہیں۔ صہیب الیاسی کا کہنا ہے کہ ’ جو چیزیں مجھے روک رہی تھیں وہ مجھ پر لگے الزام تھے۔ ان بیتے سالوں نے نہ صرف اسکول بوائے لک والے ہوسٹ کو عمر دراز اور فلسفیبنا دیا ہے۔ بلکہ اب ان کے سامنے ایسے ڈھیروں مقابلہ جاتی شوز بھی آچکے ہیں ۔ حالانکہ صہیب کو ان چیزوں سے فرق نہیں پڑتا نہیں دیکھ رہا اور وہ اسے لیکر کافی پرجوش ہیں۔

صہیب نے مزید کہا ’ انڈیاز موسٹ وانٹیڈ‘ کی وجہ سے 135 جرائم پیشہ پکڑ ے گئے ۔ کسے معلوم ہے کہ اور کتنے پکڑے جائیں۔ انہوںنے بتایا کہ ان گزرے سالوں میں انہوںنے یوں ہی بیٹھ کر وقت ضائع نہیںکیا۔ انہوں نے کہا میں نے جیل میں ریسرچ کی اور جتنے بھی شو ان دنوں د کھائے جا رہے ہیں وہ صرف پیسوں کے لئے ہیں، لیکن ہمارا شو مشن پر مبنی ہوگا۔ ہم اس شو میں نئی ٹیکنالوجی اور سوشل میڈیا کو شامل کریں گے۔

صہیب کہتے ہیں کہ ’ میرا منصوبہ ہے کہ وہ نیوز چینل کے بجائے ایک انٹرٹینمنٹ چینل لانچ کریں، کیونکہ کرکٹ اور سنیما کی طرح کرائم ہمیشہ لوگوں کا دھیان کھینچتا ہے۔ واضح رہے کہ بیوی کے قتل کے جرم میں جیل کی سزا کاٹ رہے صہیب الیاسی کو گزشتہ دنوں ہائی کورٹ نے بری کر دیا ہے۔

انہوںنے کہا کہ انہیں پورا یقین تھا کہ ایک نہ ایک دن وہ بری ہو جائیں گے۔ لیکن انہوں نے ایسا کبھی نہیں سوچا تھا اس میں 18سال کا طویل عرصہ لگ جائے گا۔ اپنی بیٹی کے بارے میں صہیب نے کہا کہ میں خوش ہوں کہ وہ کافی ذمہ دار ، آزاداور پر اعتماد ہو گئی ہے ،وہ بالکل اپنی ماں کی طرح ہے۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Suhaib ilyasi wants to bring back indias most wanted in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News
What do you think? Write Your Comment