گلوکار سونو نگم کافجر کی اذان پر سخت اعتراض، نیند ٹوٹ جاتی ہے، جرم قرار دیا

نئی دہلی: بالی ووڈ گلوکار سونو نگم کومساجد کی اذان سے پریشانی ہوتی ہے اور اذان سے ان کی نیند خراب ہوجاتی ہے۔ وہ اس سے اتنا ناراض ہیں کہ انہوں نے اس پر سوال کھڑا کرتے ہوئے کہا ہے کہ کسی کو بھی دوسرے کی نیند خراب کرنے کا حق نہیں ہے۔ گلوکار نے آج متعددٹویٹ کرکے صبح کے وقت مساجد میں ہونے والی اذان پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ وہ مسلمان نہیں ہیں لیکن مساجد میں روزانہ صبح ہونے والی اذان کی وجہ سے ان کی نیند ٹوٹ جاتی ہے اور انہیں بیدار ہوجانا پڑتا ہے۔
مسٹر نگم نے اپنی ٹویٹس میں مندر اور گرودواروں پربھی سوال اٹھائے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ مندروں اور گرودواروں میں بھی صبح کے وقت ہونے والے پروگراموں کے حق میں نہیں ہیں۔ مسٹرنگم نے کہا ہے کہ کسی کو بھی صبح کے وقت کسی کی نیند خراب کرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ ایسے مذہبی رسوم و رواج کو بند کر دینا چاہیئے۔ اپنی ٹویٹس پر کئے گئے تبصرے میں سے ایک پر جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہج جس دور میں پیغمبر محمدﷺ نے اسلام کا پیغام دیا تھا تو اس دور میں بجلی نہیں تھی۔
پھر ایڈیسن کے ایجاد کے بعد ہمیں اس شور وغل کی کیا ضرورت ہے۔ فی الحال بجلی کا استعمال کرتے ہوئے لاؤڈسپیکر کے ذریعے اس طرح کا شور کیوں کیا جا رہا ہے؟ ” گلوکار نے ٹویٹ میں کہا “خدا سب پر کرم کریں۔ میں مسلمان نہیں ہوں اور میں آج صبح اذان کی وجہ سے بیدار ہوگیا، ملک میں کب تک مذہبی رسوم ورواج کو اس طرح زبردستی نافذ کیاجاتا رہے گا۔آخری ٹویٹس میں گلوکار نے اسے جرم قرار دیتے ہوئے لکھا” یہ تو جرم ہے بس “۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sonu nigam goes on a twitter rant about azaan and forced religiousness in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News

Leave a Reply