راجیش کھنہ نے آخری صوتی پیغام میں ایسا کیا کہا ….

نئی دہلی: سال2012میں اپنے انتقال سے قبل اداکارہ راجیش کھنہ نے ایک آڈیو پیغام ریکارڈ کیا تھا ، یہ وہی انجانی باتیں تھیں جسے وہ اپنے مرنے سے پہلے لوگوں کو بتانا چاہتے تھے ۔ اداکار راجیش کھنہ نے اپنے اس آڈیو ریکارڈنگ میسیج میں کہا” میرے پیارے دوستو! بھائیوں اور بہنوں ، ناسٹی لیجیامیں رہنے کے لئے عادت نہیں مجھے ،کچھ بھی محفوظ نہیں ہے مستقبل میں، ہمیشہ کل کے بارے میں سوچنا پڑتا ہے ،جو دن گزر گئے ہیں ان کے بارے میں سوچنے کا کوئی فائدہ نہیں، لیکن محفل میں جب جانے پہچانے لوگ ملتے ہیںتو یادیں تازہ ہو جاتی ہیں۔

میں جو کچھ بھی ہوں تھیٹرکی بدولت ہوں، جو بھی کمایا ،لیکن ایک وقت تھا کہ ایک ڈائیلاگ سہی سے نہیں بول پانے کی وجہ سے مجھے بہت ڈانٹ پڑی تھی۔ اس دن میں رویا بھی تھا، مجھے کہا گیا تھا تم ایکٹر بننا چاہتے ہو، ایک لائن تو تم سے ڈھنگ سے بولی نہیں جاتی ، لعنت ہے تم پر ،کیا خاک ایکٹر بنوں گے۔

اداکارہ راجیش کھنہ کہتے ہیں ’ اس دن میرا دل رو رہا تھا ،لیکن وہ غصہ میں نے سنبھال کر رکھا ، من ہی من میں سوچا کہ ایک دن ایکٹر بن کر د کھاو¿ں گا ،پھر ان لوگوں سے بات کروںگا،فلم انڈسٹری میں کوئی گاڈ فادر نہیں تھا، نہ کوئی ایسا رشتہ دار جو کام دلانے میں مدد کرسکے، پھر ایک دن میںنے اخبار میں ایک اشتہار دیکھا ، ٹائمس آف انڈیا میں، میںنے قینچی لیکر اسے کاٹا، اسے بھرا، وہاں لکھا تھا پلیز سینڈتھری فوٹوگراف، میںنے اپنی تین فوٹوز بھی بھیج دیئے۔ مجھے بلایا گیا ۔

اس کنٹیسٹ میں بڑے بڑے پروڈیوسر کھڑے تھے، چوپڑا صاحب ، بمل رائے، ایس ایس دروڑ تھے۔۔۔۔ شکتی سامنت تھے، بہت سارے لوگ تھے۔ وہاں سب کو دیکھ کر مجھے ایسا لگا جیسے کسی کٹہرے میں شامل کردیا گیاہو، میں بہت نروس تھا، انہوںنے کہا، ایک ڈائیلاگ جو تمہیں دیا تھا ،یاد کیا ہے ،پڑھکر سناو¿، میں نے کہا ،ڈائیلاگ تو میںنے پڑھا ہے لیکنآپ نے کردار کا کا کریکٹرائزیشن نہیں بتایا ، ڈائیلاگ تھا، ہیرو اپنی ماں کو بتاتا ہے کہ وہ ایک ناچنے والی سے پیار کرتا ہے اور اسی سے شادی بھی کرنا چاہتا ہے۔ ڈائیلاگ تو ٹھیک لیکن یہ نہیں بتایا گیا، ہیرو کس گھرانے سے تعلق رکھتا ہے ، اس کی ماں کیسی ہے، اس کا مزاج کیسا ہے ،غصے والی ہے یا نہیں، ان پڑھ ہے یا پڑھی لکھی۔ میری بات سن کر چوپڑا صاحب نے جھٹ سے کہا، تم تھیٹرآرٹسٹ ہو، میںنے کہا ،ہاں! کیونکہ یہ ساری باتیں ایک اسٹیج آرٹسٹ ہی کر سکتا ہے پھر انہوںنے کہا، اچھا چلو اپنا خود کا ہی ایک ڈائیلاگ بول کر دیکھادو، ادھر کنواں تو ادھر کھائی ، سجھ نہیں آرہا تھا اب کیا کروں، ڈر لگ رہا تھا، اس وقت تو کسی بھی فلم کا کوئی بھی ڈائیلاگ یاد نہیں آرہا تھا۔

راجیش کھنہ کہتے ’ تبھی خدا کی یاد سے ایک ناٹک کا ڈائیلاگ یاد آ گیا ، میں نے پوچھا ، مجھے اس ڈائیلاگ کو بولنے کے لئے کرسی سے اٹھنا پڑے گا، انہوں نے بولا جو بھی کرنا ہے آپ کر سکتے ہیں، لیکن کچھ کرکے دیکھائیے تو سہی، بس یہ وہی ایک ڈائیلاگ ہے جس کی بدولت مجھے کوئی کام ملا، مجھے جی پی سپی نے موقع دیا تھا 40سال پہلے ، ہاں میں فنکار ہوں، ہاں میں کلا کار ہوں، کیا کروگی میری کہانی سن کر؟ آج سے کئی سال پہلے ہونی کے بہکانے سے ایک ایسا پیالہ پی چکا ہوں ،جو میرے لئے زہر تھا، اوروں کےلئے امرت۔۔۔ ایک ایسی بات جس کا اقرار کرتے ہوئے میری زبان پر چھالے پڑ جائیں گے لیکن پھر بھی کہتا ہوں کہ جب میں چھوٹا تھا ،ایک خوفناک واقعہ پیش آیا کیونکہ میں ایک خوفناک آگ میں پھنس گیا ،جب زندہ بچا تو معلوم ہوا کہ میں بدصورت ہو گیا ہوں،جیسے سہانی صبح ڈراونی رات میں پلٹ گئی ہو۔

راجیش کھنہ آگے کہتے ہیں ’میں فلموں میں تو آگیا لیکن کامیابی کا کریڈٹ تو آپ کو ہی جاتا ہے جنہوںنے مجھے اسٹار سے سپر اسٹار بنایا ، میں کس طرح آپ کا شکریہ ادا کروں، سمجھ نہیں آتا ، آپ مجھے پیار بھیجتے رہے لیکن میں اس پیار کو واپس نہیں کر پایا ،اس بات کا افسوس ہے، لیکن آج میرا دل ہلکا ہوگیا، جو بھی من میں تھا کہہ دیا، آپ کو دل سے پیار کرتا ہوں، عزت کرتا ہوں، بس یہی مجھے ملتا رہے اسی کی دعا اور خواہش ہے۔
دوستوں! آپ کے پیار کے لئے بھی شکریہ ،آپ نے پیار دیا ۔۔۔میرے لئے وقت نکالا ، میری فلمیں دیکھیں، اداکاری کو سراہا ، آپ کا بہت بہت شکریہ، آپ سبھی کو تھینک یو اورمیرا بہت بہت سلام،۔

خیال رہے 18جولائی 2012کو پریوار اور دوستوں کے ذریعہ ’ کاکا‘ کہہ کر پکارے جانے والے سپر اسٹار راجیش کھنہ کاانتقال ہو گیا تھا ، وہ 69سال کے تھے۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Rajesh khanna last audio message in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News

Leave a Reply