شاعری کی دنیا میں آج ندا فاضلی کا یوم پیدائش منایا جا رہا ہے

ممبئی: اردو کے مشہور شاعر اور فلم نغمہ نگار ندا فاضلی نے سورداس کی ایک نظم سے متاثر ہوکر شاعر بننے کا فیصلہ کیا تھا۔ یہ بات اس وقت کی ہے جب ان کا پورا خاندان تقسیم ہند کے بعد ہندستان سے پاکستان چلا گیا تھا لیکن ندا فاضلی نے ہندوستان میں ہی رہنے کا فیصلہ کیا۔ ایک دن وہ ایک مندر کے پاس سے گزر رہے تھے کہ تبھی انہیں سورداس کی ایک نظم سنائی دی جس میں رادھا اور کرشن کی علیحدگی کو بیان کیا گیا تھا۔
ندا اس نظم کو سن کر اتنے جذباتی ہو گئے کہ انہوں نے اسی وقت فیصلہ کر لیا کہ وہ شاعر کے طور پر اپنی شناخت بنائیں گے۔12 اکتوبر 1938 کو دہلی میں پیدا ہوئے ندا فاضلی کو شاعری ورثہ میں ملی تھی۔ان کے گھر میں اردو اور فارسی کے دیوان بھرے پڑے تھے۔ ان کے والد بھی شعر و شاعری میں دلچسپی لیا کرتے تھے اور ان کا اپنا شعری مجموعہ بھی تھا، جسے ندا اکثر پڑھا کرتے تھے۔ ندا فاضلی نے گوالیار کالج سے ماسٹرز کی تعلیم مکمل کی اور اپنے خوابوں کو نئی شکل دینے کے لیے وہ 1964 میں بمبئی (اب ممبئی) آ گئے۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Poet nida fazlis 78th birthday in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News

Leave a Reply