تھیٹرمیں اداکاری کرنے میں جو مزہ آتا ہے وہ فلموں میں نہیں:اسرانی

نئی دہلی:بالی ووڈ میں مزاحیہ کرداروں سے اپنی منفرد شناخت بنانے والے اسرانی کا خیال ہے کہ بطور آرٹسٹ ایک اداکار کو تھیٹرمیں اداکاری کرنے میں جو مزہ آتا ہے وہ فلموں میں نہیں آتا۔ اسرانی یہاں لوکش رام لیلا میں شرکت کرنے کے لئے آئیں ہوئے ہیں۔
اسرانی سے کہا ”فلموں کے کام کے دوران میرے سامنے صرف کیمرے اور ڈائریکٹر کی ہدایت ہوتی ہے، لیکن جب ہم تھیئٹر میں اداکاری کر رہے ہوتے ہیں تو ہمارے سامنے ناظرین ہوتے ہیں اور وہاں ہماری اداکاری فوری رد عمل سامنے آتا ہے۔ ناظرین کے اس ردعمل سے اداکاری میں کافی اصلاح ہوتی ہے۔ آپ کو فوری طور پر پتہ چل جاتا ہے کہ ناظرین آپ کی اداکاری کو پسند کر رہے ہیں یا نہیں“؟
’شعلے‘ میں جیلر کے کردار سے داد و تحسین حاصل کرنے والے اداکار نے کہا ”ہالی وڈ کے زیادہ تر اداکار وں کو براڈوے (ایک قسم کے تھیٹر) پر آنا پڑتا ہے۔ رچرڈ برٹن اور مارلن برانڈو جیسے اداکار بھی اپنے دور میں فلموں کے ساتھ ساتھ براڈوے تھیئٹر پر کام کرتے رہے ہیں۔ رچرڈ برٹن تو ’کلیوپیٹرا‘ جیسی بہترین فلم کرنے کے بعد بھی براڈوے پر آئے تھے“۔ رام لیلا میں اس بار سباھو کا کردار ادا کر رہے اسرانی نے کہا ”میں خود کو خوش قسمت سمجھتا ہوں کہ رام لیلا کے ایسے پلیٹ فارم پر مجھے اداکاری کرنے کا موقع مل رہا ہے جہاں آپ کے سامنے ہزاروں کی تعداد میں ناظرین ہوں گے“۔
انہوں نے کہا کہ بالی وڈ کے بڑے ستارے پیسوں کی وجہ سے تھیئڑ کے پلیٹ فارم پر آنے سے بچتے ہیں کیونکہ انہیں فلموں میں کافی پیسہ ملتا ہے لیکن تھیئٹر کے فنکاروں کو زیادہ پیسہ نہیں ملتا“۔ اسرانی نے کہا ”میں نے پچھلی بار رام لیلا میں نارد کا کردار ادا کیا تھا اور اس بار سباھو کا کردار ادا کر رہا ہوں جو کہ منفی ہے، لیکن رام لیلا میں اس کا اہم رول ہے۔ سامعین کے لئے بھی مجھے راکشس کا کردار میں دیکھنا دلچسپ ہوگا“۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: I like theater work asrani in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News

Leave a Reply