فلم فلاپ ہوئی تو میرا نقصان سب سے پہلے ہوتا ہے:عامر خان

نئی دہلی: بالی وڈ کے مسٹر پرفیکشنسٹ کہے جانے والے اداکار عامر خان نے آخر کار یہ راز طشت ازبام کر ہی دیاکہ وہ فلموں میں 80فیصد کی حصے داری کیوں لیتے ہیں۔

پانچویں انڈین اسکرین رائٹرز کانفرنس میں عامر خان نے بتایا کہ لوگوں کو ایسا لگتا ہے کہ انہیں ہی بہت سارا منافع ملتا ہے تو ایسا بالکل بھی نہیں ہے ۔ اداکار عا مر خان کا کہنا ہے کہ مجھے فلم کی کمائی کا منافع و فائدہ سب سے بعد میں ملتا ہے ، انہوںنے فلم کی کمائی سے ہونے والے منافع کے پورے طریقہ کار کو تفصیل میں لوگوں کو سمجھایا۔

عامر خان نے کہا” اگر کوئی فلم 100کروڑ روپے میں بنتی ہے تو رائٹرز ، ٹیکنیشنس ، ایکٹریزکے علاوہ کام کر رہے ہر شخص کو فیس فلم کے اس 100کروڑ روپے میں سے مل جاتی ہے، جبکہ میرا پیسہ مجھے شروع میں نہیں ملتا ، ایسا اس لئے کیونکہ میں اس فلم کا پروفٹ پارٹنر ہوں“۔ عامر آگے کہتے ہیں کہ اگر فلم کی تشہیر میں 25کروڑ روپے خرچ ہوئے تو سب سے پہلے یہ رقم ادا کی جائے گی۔

ایکٹر عامر خان مزید کہتے ہیں کہ اس طرح سے اس فلم کی 125کروڑ رو پے کی ادائیگی کے بعد جو رقم بچتی ہے اس میں سے طے کیا ہوا 80فیصد حصہ مجھے دیا جاتا ہے۔

عامر خان نے بتایا کہ یہی وجہ ہے کہ فلم پروڈیوسر میرے ساتھ کام کرنے میں گھبراتے نہیں ہیں۔ انہیں میری فیس گراں نہیں گذرتی ہے۔حقیقت میں مجھے ہی سب سے بعد میں پیسہ ملتا ہے۔ علاوہ ازیں اس میں ایک بڑ ا خطرہ بھی ہے کہ اگر فلم نہیں فلاپ ہوئی تو میرا نقصان سب سے پہلے ہوتا ہے۔

Read all Latest entertainment news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from entertainment and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Aamir khan revealed why take lion share in movie production in Urdu | In Category: انٹرٹینمنٹ Entertainment Urdu News
What do you think? Write Your Comment