اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے بچت کھاتوں میں کم از کم بیلنس کی حدبڑھا کر5000روپے کر دی

نئی دہلی: اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے یکم اپریل سے بچت کھاتوں میں کم از کم بیلنس کی حد میںاضافہ کر دیا ہے۔ 6میٹرو شہروں دہلی، ممبئی، چنئی ،بنگلورو ، کولکاتا اور حیدر آبادمیں واقع بینکوں کے کھاتے داروں کو ماہانہ اوسطاً بیلنس کم از کم 5000روپے رکھنا ہو گا جبکہ شہری علاقوں میں 3000اور دیہی علاقوں میں کم از کم بیلنس کی حد 2000روپے مقرر کی گئی ہے۔
یکم اپریل سے لاگو ہونے والے اس فیصلہ کے بعد اگر کسی کھاتے دار کا کم ا زکم بیلنس مقررہ حد سے کم ہوا تو ایسے صارفین سے بینک100اور50روپے مع سروس ٹیکس ماہانہ جرمانہ وصول کرے گا۔یعنی اگر کسی کھاتے دار کا بیلنس مقررہ حد سے 75فیصد کم ہے تو 100روپے پلس سروس چارج اور اگر 50فیصد ہے تو 50روپے پلس سروس چارج جرمانہ وصول کیا جائے گا۔
تاہم بینک ایسے صارف کو ایک ماہ پہلے مطلع کرے گا کہ اس کے کھاتے میں کم از کم بیلنس مقررہ حد سے کم ہے۔اس سے قبل اسٹیٹ بینک میں چیک بک کے ساتھ کم از کم بیلنس کی حد 1000اور بغیر چیک بک کے کم ا زکم بیلنس کی حد500روپے تھی۔

Read all Latest business news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from business and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sbi hikes minimum balance for savings account to rs 5000 in metros in Urdu | In Category: بزنس Business Urdu News

Leave a Reply