مولانا فضل الرحمان اور آزادی مارچ

گل بخشالوی

اقتدار سے قبل آج کے وزیرِ اعظم پاکستان عمران خان نے مسلم لیگ ن اور ان کے رفقائے اقتدار کے خلاف اسلام آباد میں دھرنادیا۔تو حکمران جماعت کے وزیرِاعظم میاں محمد نواز شریف اور اس کے درباریوں نے دھرنے کا خوب مذاق اڑایا،دھرنے کی وجہ سے نواز شریف نے تو استعفیٰ نہیں دیا لیکن دیوار یں ضرور ہل گئی تھیں۔انتخابات میں اقتدار سے بھی گئے اور آجکل کرپشن کے مقدمات میں اپنی بیٹی کے ساتھ جیل میں ہیں،اور دھرنا دینے والے عمران خان وزیرِاعظم ہیں !

مولانا فضل الرحمان بھی ایسا ہی کچھ خواب دیکھ رہے ہیں،اگر عمران خان دھرنا دے کر وزیرِ اعظم بن سکتا ہے تو میں کیوں نہیں اور اس خوش فہمی میں پیپلز پارٹی مسلم لیگ ن اور نیشنل عوامی پارٹی کے ساتھ دھرنا دینے نکلے ہیں کیا ہی بہتر ہوتا اگر یہ مارچ کشمیر کے لئے ہوتی اور دھرنا کشمیر میں دیتے۔ یہ تنہامیں نہیں کہہ رہا وطنِ عزیز کے لوگ بھی یہی سوچتے ہیں۔ لیکن یہ کیوں نہیں سوچتے کے یہ مارچ اور دھرنا کشمیر کاز کو نقصان پہنچانے اور آزادی کشمیر کے لئے فلک شگاف آواز کو دبانے کے بھارتی ایجنڈا پر فضل الرحمان قوم میں افراتفری پھیلا رہے ہیں۔لیکن لگتا ہے وزیرِاعظم خوف زدہ نہیں اسلئے کہ گذشتہ دنوں انہوں نے کہا کہ پہلی اسمبلی ہے جو بغیر ڈیزل کے چل رہی ہے اس میں شک بھی نہیں پہلی حکمرانی ہے جس میں مولانا صاحب شامل نہیں ، مولاناانتخابات میں عبرتناک شکست سے دوچار ہوئے ہیں اس لئے کہ ہر دورِ اقتدار میں مولانا صاحب نے دین کے لئے اور کشمیر کمیٹی کے چیئر مین ہونے کے باوجود کشمیریوں کے لئے کبھی نہیں سوچا۔ اپنی ذات کے گرد طواف میں تھے اس لئے حلقہ انتخاب کے عوام نے اسمبلی ہی سے باہر کر دیا۔مولانا فضل الرحمان عمران سے اپوزیشن کی طرح خوف زدہ ہیں۔اسلئے کہ عمران خان کرپٹ سیاست دانوں کو کیفرِ کردار تک پہنچانے کا عزم کئے ہوئے ہیں،کسی صحافی نے مولانا سے سوال کیا کہ اگر انتخابات میں عمران خان دوبارہ جیت گئے تو پھر کیا ہوگا ،مولانا نے جواب دیا پھر دھرنا دوں گا!

مولانا فضل الرحمان کے دیرینہ دوست سیاست میں سب سے چھوٹے شریف مسلم لیگ شین کے شہباز شریف اپنے بڑے فرشتہ سیرت وصفت بھائی کی، جو فی الحال کرپشن کے الزام میں اپنی بیٹی کے ساتھ جیل میں پڑے ہیں ، خواہش پر اپنے دکھ پیٹنے کے لئے مولانا کے ساتھ ہیں۔ کہتے ہیں کہ حکومت ہر شعبہ میں ناکام ہو گئی ہے اور معیشت تباہ ہو رہی ہے۔ وعدہ کرتا ہوں کہ اگر اقتدار میں آیا تو چھ ماہ میں قومی معیشت پاؤں پر کھڑی کر دوں گا۔ یہ وہ ہی شہباز شریف ہے جس نے کہا تھا اقتدار میں آیا تو زرداری کو راوی پل سے لٹکاؤں گا، اس کا پیٹ کاٹ کر ساری چوری کی ہوئے دولت نکا لوں گا اگر زرداری کو سڑکوں پر نہ گھسیٹا تو میرا نام شہباز شریف نہیں ہوگا،لیکن قوم نے مسترد کردیا قوم جانتی تھی کہ جھوٹ بھول رہا ہے اور وہی ہو اسی زرداری کو اس نے گلے لگا لیا اور نام بھی نہ بدلا۔مولانا اور اس کے ہمسفر دھرنا آزادی مارچ بخوبی جانتے ہیں ۔تاجر برادری سے ملاقات میں آرمی چیف نے کہا تھا کہ حکومت کہیں نہیں جارہی آپ سرمایہ کاری کریں اس کے باوجود بھی اگر مولانا کو اسلام آباد کی یاد ستاتی ہے تو وہ یہ بھی جانتے ہیں کہ اڈیالہ جیل بھی اسلام آباد کے قریب ہے۔

وزیرِ اعظم پاکستان وطن دوست علماءکرام کے ساتھ بیٹھ کر کہہ رہے ہیں کہ مولانا قومی سیاست میں مذہبی کارڈ استعمال کر کے امہ میں تفریق او ر تقسیم کی طرف جا رہے ہیں ان کو ر وکنے کے لئے حکومت کا ساتھ دیں۔ ظاہر ہے حکومت قومی سلامتی کے لئے اپنا قومی کردار ادا کرے گی ،وطن دوست طبقوں سے مدد کے ساتھ ان کو خبردار کر رہی ہے کی اگر حکومت کسی انتہائی اقدام پر مجبور ہوئی تو کل کوئی یہ نہ کہے کہ حکومت نے ہمیں اعتماد میں نہیں لیا ۔

تحریکِ انصاف کی حکمرانی پریشان نہیں ،وہ جانتی تھی کہ یہ لوگ آرام نہیں کریں گے اس لئے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کی گئی تھی اس لئے کہ بد کرداروں کو کیفرِ کردار تک پہنچانے کے لئے دونوں کا ایجنڈا ایک ہے، میرا نہیں خیال کہ مولا نا کے مارچ اور دھرنے میں حکومت کوئی رکاوٹ ڈالے گی اس لئے کہ حکومت جانتی ہے کہ مارچ اور دھرنے کے شرکا وہی کچھ کریں گے جو تحریکِ لبیک کی قیادت اور شرکا نے کیا تھا۔اور یہ ہی جواز ہو گا مولاناکی خود غرض سیاست کو انجام تک پہنچانے کے لئے !! مولانا اپنے درباریوں اور ڈنڈا بردار فورس کے کمانڈروں کے ساتھ گرفتا ر ہوں گے جب ان کی اڈیالہ جیل کے مچھر خبر لیں گے تو ہوش ٹھکانے آئیں گے اور وہ ہی کچھ کریں گے جو تحریکِ لبیک کی قیادت نے کیا۔

علامہ خادم حسین رضوی کا بیان شائد مولانا فضل الرحمان کی نظر سے نہیں گزرا اور نہ کان نے سنا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ نواز شریف کو جیل میں میرے والے کمرے میں بند کردو تو نہ صرف ساری دولت واپس کر دے گا بلکہ سیاست سے ہمیشہ کے لئے توبہ کر لے گا۔!!!!

Read all Latest politics news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from politics and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Maulana fazal ur rehman and his azadi march in Urdu | In Category: سیاسیات Politics Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.